شہباز شریف

شہباز شریف کی تجویز مسترد، نیب کے عمل پر کوئی کمیٹی نہیں بنائی جا سکتی، وزیر قانون

اسلام آباد(یواین پی) وزیر قانون فروغ نسیم نے نیب الزامات کی تحقیقات کےلئے شہباز شریف کی جانب سے پارلیمانی کمیٹی کے قیام کی تجویز کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ نیب کے عمل پر کوئی کمیٹی نہیں بنائی جا سکتی،قانون میں ایسی کوئی گنجائش نہیں ،نیب آزاد ادارہ ہے، حکومت مداخلت نہیں کر سکتی۔ وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا رول 31 تھری اے کہتا ہے کسی زیر سماعت مقدمہ پر بحث نہیں ہو سکتی، اپوزیشن لیڈر نے ہاو¿س کمیٹی بنانے کا مطالبہ کیا، نیب آرڈیننس کے تحت ہاو¿س کمیٹی نہیں بن سکتی۔نیب آرڈینینس کا سیکشن 24 کہتا ہے کہ نیب کسی کو بھی کسی بھی وقت گرفتار کرسکتا ہے۔وزیر قانون نے کہا کہ میرا کام آپ کو بتانا ہے آپ مانیں یا نہ مانیں اور نیب نے خود اقدامات اٹھائے،حکومت نے کوئی ہدایت نہیں کی۔انھوں نے کہا کہ یہ عدالت نہیں، قومی اسمبلی میں یہ ڈسکس نہیں ہوسکتا کہ نیب تحقیقات قانونی ہیں یا غیر قانونی، نیب کو تحقیقات کے تحت گرفتاری کا اختیار حاصل ہے، اگر آپ کو اس پر اعتراض ہے تو اپنی حکومت میں قانون تبدیل کردیتے، حکومت کی نیب میں کوئی مداخلت نہیں۔