کمیشن

میڈیا پر انتخابی نتائج نشر کرنے پر پابندی .. خبر نے مسلم لیگ (ن) کو پریشان کر دیا

میڈیا پر انتخابی نتائج نشر کرنے پر پابندی .. خبر نے مسلم لیگ (ن) کو پریشان کر دیا…….سیکریٹری الیکشن کمیشن نے کہا کہ ضابطہ اخلاق کے تحت انتخابی نتائج شام 7 بجے سے قبل نشر کرنے پر پابندی ہے، میڈیا عملدرآمد یقینی بنائے۔الیکشن کمیشن اعلامیے کے مطابق کمیشن سیکریٹریٹ میں ایک میڈیا سیل قائم کیا گیا ہے جو میڈیا کو بروقت اور مستند نتائج فراہم کرے گا۔

————————-
یہ خبر بھی پڑھیئے

کراچی، صنعتی شعبوں کے حوالے سے زیر التواء تمام این او سیز کو اسکروٹنی کے بعد جلد از جلدجاری کیا جائے،
ماحولیات کی بہتری اور صاف ماحول کے لئے ماحولیاتی قوانین پر مکمل عملدرآمد یقینی بنایاجائے، صوبائی وزیرجمیل یوسف
کراچی ÷÷÷÷ نگراں صوبائی وزیر ماحولیات وکوسٹل ڈیولپمنٹ جمیل یوسف نے آج محکمہ ماحولیات ،ماحولیاتی تبدیلی اور ،ساحلی ترقی کے تعارفی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے افسران پر زور دیا ہے کہ وہ سجاول ،ٹھٹھاور بدین اضلاع کی ساحلی پٹی میں ماہی گیروں کی ترقی وفلاح کے لئے کام کریں اورماہی گیروں کی کشتیوں میں ٹریکنگ کا جدید نظام مروج کرنے کے لئے عملی اقدامات کیے جائیں ماہی گیروں کی فلاح و بہبود اور ترقیاتی منصوبوں کو بروقت مکمل کرکے ہی ہم مقررہ اہداف حاصل کرسکتے ہیں۔محکمہ ماحولیات کے دورے کے بعد ایک تعارفی اجلاس کی صدرات کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ماحولیات کی بہتری اور صاف ماحول کے لئے ماحولیاتی قوانین پر مکمل عملدرآمد کروایا جائے اس کے لئے صنعتی شعبوں سے دوستانہ اور سازگار ماحول کے ذریعے کام کریں تاکہ ماحولیات کو پاک صاف اور بہتر بنانے کے ضمن میں مطلوبہ نتائج حا صل کئے جاسکیں ،سیکریٹری ماحولیا ت مختیار احمد سومرو نے بتایا کہ ماحولیات کے قوانین پر عملدرآمد کے لئے سیپا کے تحت مشترکہ لائحہ عمل کی ضرورت ہے صنعتی شعبہ کی ترقی کے لئے انہیں مکمل تعاون اور مدد فراہم کرکے SEPAکو مزید فعال اور مستعد بنایا جا رہا ہے۔۔ڈی جی کوسٹل ڈیولپمنٹ اتھارٹی اسحٰاق مہر اور شہر یار قاضی نے بتایا کہ ساحلی علاقوں کی مختلف اسکیموں جن میں 50 ایکڑ پر مشتمل پام آئل کی کاشت و بو ائی سمیت 979.575ملین کی ترقیاتی اسکیموں پر کام جاری ہے اس سلسلے میں مزید منصوبوں کے لیے ملکی وغیر ملکی نجی شعبے کے تعاون حاصل کرنے پر غور کیا جارہا ہے۔سیکریٹری ماحولیات نے کہا کہ اب مون سون کے موسم میں ساحلی پٹی میں موثر رابطے اور کمیونیکیشن کی ضرورت ہے جس کے لئے غیر سرکاری تنظیموں اور مخیر حضرات سے رابطہ کرکے ہم انہیں بروقت فائدہ پہنچاسکتے ہیں اور بروقت اطلاع دیکر ان کی فلاح وبہبود کیلئے کام کرسکتے ہیں۔ ایڈیشنل ڈائریکٹرجنرل ماحولیات نعیم مغل نے ماحولیات کو بہتر بنانے کی کاررپورٹ سوشل رسپانسبلٹی ) سی ایس آر) کے تحت کئی منصوبوں اور اسکیموں پر سول سوسائٹی اور اداروں کے تعاون پر زور دیا .انہوں نے مزید بتایا کہ 18ویں ترمیم کے بعد سندھ ماحولیلت ایکٹ کے تحت صنعتی شعبے ماحول کو بہتر بنانے کے لئے ٹریٹمنٹ پلانٹ لگانے کے پابند ہیں سیپا اس سلسلے میں ان کے تعاون سے عملدرآمد کے لئے کام کررہا ہے۔انفورسٹمنٹ (قانون سازی)پر عمل سست ہے لیکن اسے فعال اورموثر بنانے کے لئے اقدامات کررہے ہیں قانون میں موجود شقوں پر عملدرآمد کے لئے بھی تمام اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ صوبائی وزیر ماحولیات جمیل یوسف نے ساحلی علاقوں کے لیے قائم 20رکنی اعلی سطحی بورڈ میں 2 معززممبرز کی تعیناتی کیلے ہدایت کی کہ ساحلی ترقی و تحقیق اور ماحولیات کے حوالے سے مقامی شخصیات کو اولیت دے کر بورڈ میں شامل کرنے کے لیے تمام متعلقہ اداروں اور تنظیموں سے رابطہ کیا جائے۔نگراں صوبائی وزیر ماحولیات وکوسٹل ڈیویلپمنٹ جمیل یوسف نے کہا کہ صنعتی شعبوں کے حوالے سے زیر التواء تمام این او سیز کو اسکروٹنی کے بعد جلد از جلدجاری کیا جائے تاکہ ملکی معیشت میں اضافہ ہواور صنعتی شعبے اس میں اپنا کردار ادا کرسکیں۔انہوں نے ہدایت کی کہ ماحولیاتی افسران اپنے فرائض قانون کے مطابق انجام دیں اور شکایات کے ازالے کے لئے بلاتاخیر کارروائی کریں صنعتی شعبے کو زیادہ سے زیادہ شجرکاری کی ترغیب دی جائے اور مشترکہ طور پر اپنی سماجی ذمہ داریاں ادا کرنے میں تاخیر نہ کی جائے ایک اچھے شہری اور محب وطن پاکستانی کی طرح اپنی سماجی ذمہ اداریوں کو احسن طریقے سے انجام دیں اور تمام سماجی کاموں اور سرگرمیوں میں سول سو سائٹی کے ساتھ موثر تعاون اور رابطوں کو بڑھائیں۔نگراں صوبائی وزیر ماحولیات وکوسٹل ڈیولپمنٹ جمیل یوسف نے کہا کہ واٹر کمیشن کی ہدایات کی روشنی میں نالوں گٹروں اور دیگر مقامات کی صفائی کے دوران کچرے کو نکا لنے کے لئے کیلئے متعلقہ اداروں کو ہدایات جاری کی جائیں کہ وہ انہیں دور دراز مناسب مقامات پر پہچانے کا بندوبست کریں کیونکہ مون سون بارشوں کے دوران کچرادوبارہ ان نالوں میں جائے گا اور اس سے ماحولیاتی مسائل میں مزید اضافہ ہوگا لہٰذا انہیں بروقت اطلاع کریں تاکہ اس کا مناسب اور بروقت تدارک کریں۔