Wednesday , February 22 2017
not-india-but-burhan-dujana-rule-kashmir-er-rasheed-1483519087-9954

ہندوستان میں اقلیتیں محفوظ نہیں ہیں

 عوامی اتحاد پارٹی اے آئی پی سربراہ انجینئر رشید کو پولیس نے وجے پور میں ہریا چک کٹھوعہ جانے سے روک دیا ۔ نجینئر رشید کو واپس پولیس کی حراست میں جموں بھیج دیا ۔وجے پور میں زبردستی جموں واپس کرائے جانے سے قبل انجینئر رشید نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی انتظامیہ پوری طرح سے ہندو انتہا پسندوں کے چنگل میں آ چکی ہے اور صاف ظاہر ہے کہ یہاں ہندوں اور مسلمانوں کیلئے قانون نافذ ہیں۔ انہوں نے کہا دہشت گردی کے اس واقع میں ملوث RSSکے مقامی سرغنہ راکیش کا ماضی کا ریکارڈ بے حد خراب ہے اور یہ شخص صرف کل ہی گجرات سے RSSکے کیمپ میں دو مہینہ ٹرایننگ کرکے واپس آیا تھا اور صبح کوئی بہانا کرکے اقلیتی فرقہ پر اندھا دھند فائرنگ کی اور ایسا کرنے کیلئے اس نے پٹھانکوٹ اور ملحقہ علاقوں سے دہشت گردوں کو وہاں بلایا تھا ، حد تو یہ ہے کہ جب وہاں پولیس پہنچی تو اس نے بھی خوف کے مارے سینکڑوں مرد و زن کو زد و کوب کیا اور دہشت گردوں کو پورا تحفظ فراہم کیا۔انجینئر رشید نے عالمی برادری اور انسانی حقوق کی تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ متعلقہ واقعہ کا سنگین نوٹس لیں اور پوری دنیا کے سامنے اس بات کو بے نقاب کریں کہ ہندوستان میں بالعموم اور جموں میں بالخصوص اقلیتیں محفوظ نہیں ہیں۔