بنیادی صفحہ -> دنیا کی خبریں -> مائیکل نامی سمندری طوفان امریکی ریاست فلوریڈا سے ٹکرا گیا،2افراد ہلاک
انڈونیشیا

مائیکل نامی سمندری طوفان امریکی ریاست فلوریڈا سے ٹکرا گیا،2افراد ہلاک

لاہور(ویب ڈیسک): مائیکل نامی سمندری طوفان نے امریکی ریاست فلوریڈا کے علاقے پان ہینڈل میں تباہی مچادی، دو افراد ہلاک ہوگئے۔ امریکا کے سمندری طوفانوں پر نظر رکھنے والے مرکز کے مطابق یہ گزشتہ کئی دہائیوں کا طاقتور ترین سمندری طوفان ہے۔ حکام نے بتایا کہ گرینزبرو نامی شہر میں ایک درخت گرنے کے سبب ایک شخص ہلاک ہوا ہے۔ متاثرہ علاقوں میں لاکھوں گھر بجلی سے محروم ہیں۔ فلوریڈا کے گورنر رِک اسکاٹ نے امدادی ٹیمیں متاثرہ علاقے میں روانہ کر دی ہیں۔ یہ طوفان اب ہمسایہ ریاست جارجیا کی طرف بڑھ رہا ہے۔ امید کی جا رہی ہے کہ اب اس کی شدت میں کمی واقع ہو گی۔امریکی نشریاتی ادارے سی این این کے مطابق سمندری طوفان کے باعث کئی علاقے پانی میں ڈوب گئے، تیز ہواؤں کی وجہ سے کئی درخت اور بجلی کے کھمبے اکھڑ گئے اور سڑکیں بھی زیر آب آگئیں۔ 250 کلومیٹر کی رفتار سے چلنے والی ہواؤں کے باعث کئی گھروں کی چھتیں اڑ گئیں، بجلی اور مواصلات کا نظام درہم برہم ہوگیا اور ایئرپورٹس پر شیڈول فلائٹ بھی منسوخ کردی گئیں۔فلوریڈا کے حکام کا کہنا ہے کہ طوفان کے باعث متاثرہ 6 ہزار 700 افراد نے 54 شیلٹرز میں پناہ لی ہے جہاں انہیں بنیادی ضروریات کی اشیا فراہم کی جارہی ہیں۔کانٹی کمشنر ایلیویا اسمتھ کا کہنا ہے کہ فلوریڈا میں آنے والا طوفان مائیکل کیٹیگری 4 کا قرار دیا گیا ہے جس کے باعث کانٹی گیڈسڈین میں ایک شخص ہلاک ہوا۔کانٹی کمشنر کے مطابق طوفان سے متاثرہ علاقوں میں امدادی ٹیمیں بھیجنے میں احتیاط کی جارہی ہے۔ 1992 میں آنے والے اینڈریو طوفان کے بعد مائیکل نامی طوفان کو خطرناک ترین قرار دیا جارہا ہے۔حکام کا کہنا ہے کہ طوفان جوں جوں جارجیا کی جانب بڑھ رہا ہے اس کی شدت میں کمی آرہی ہے اور سمندری ہوائیں 20 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے چل رہی ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*