بنیادی صفحہ -> پاکستان کی خبریں -> سکولوں سے ٹیکس کی مد میں 1اعشاریہ دو ارب واجب الادا ہیں :ایف بی آر
ٹیکس
ٹیکس

سکولوں سے ٹیکس کی مد میں 1اعشاریہ دو ارب واجب الادا ہیں :ایف بی آر

لاہور(ویب ڈیسک)سپریم کورٹ آف پاکستان میں جاری نجی سکولوں کی اضافی فیسوں سے متعلق کیس میں ایف بی آر ممبر نے بتایا کہاکہ ایک عشاریہ دو ارب ٹیکس کی مدمیں مختلف سکولوں کے ذمہ واجب الاداہیں ،7 سکولوں سے متعلق کارروائی چل رہی ہے جبکہ کچھ سکولوں نے حکم امتناع لے رکھاہے۔
ذرائع کے مطا بق :چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ عدالتی نشاندہی سے پہلے ایف بی آرسوتارہتاہے؟وہ دستاویزات نکالیں جس کے مطابق لاہورکے ایک سکول کی ڈائریکٹر 85 لاکھ تنخواہ لے رہی ہیں۔سیکرٹری قانون و انصاف نے کہا کہ ایک ڈائریکٹرکی سالانہ تنخواہ 12 کروڑ 30 لاکھ ہے،ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ ایک سکول کی ڈائریکٹرساڑھے 10 کروڑسالانہ لے رہی ہیں،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ بڑے بڑے لوگوں نے سکول کھول رکھے ہیں اوریہ اپنی بیگمات کوسکول کھول کر دیتے ہیں، یہ ہیں وہ غریب لوگ جوبچوں کوتعلیم دے رہے ہیں؟جوبھی ڈیپارٹمنٹ ان کےخلاف ایکشن لے سکتاہے لے،چیف جسٹس نے کہا کہ زیروبیلنس شوکرنے کیلئے زیادہ تنخواہیں بتائی جاتی ہیں۔

وفاقی حکومت نے سندھ حکومت کے پیسے روک لیے
لاہور(ویب ڈیسک) رواں مالی سال میں وفاقی حکومت کی جانب سے سندھ کے 90 ارب 63 کروڑ روپے روک لیے گئے، سندھ حکومت نے وفاق سے مالیاتی شیئر اور فنڈز روکنے کو سیاسی انتقام قرار دیدیا، معاملہ پارلیمان اور وفاق میں اعلٰی سطح پر اٹھانے کا فیصلہ کر لیا گیا۔ رواں مالی سال میں وفاق اور سندھ کے درمیان مالیاتی شیئر میں کٹوتی کی دستاویز سامنے آگئیں۔ 2018-19 کے پہلے 6 ماہ میں سندھ حکومت کو 332 ارب روپے ملنے تھے۔ وفاقی حکومت نے دسمبر تک صرف 241 ارب روپے سندھ کوٹرانسفر کیے، این ایف سی ایوارڈ کی مد میں سندھ کے 84 ارب روپے روکے گئے۔ وفاق اور سندھ کے درمیان مالیاتی شیئر میں کٹوتی کی دستاویز بھی سامنے آگئیں، جس کے مطابق وفاق نے او زیڈ ٹی کی مد میں 5854 ملین سندھ کو دئیے۔ رواں مالی سال سندھ کو مجموعی طور پر 665 ارب روپے کا مالیاتی شیئر ملنا ہے۔ گزشتہ مالی سال میں بھی صوبوں کو مکمل مالیاتی شیئر نہیں ملا تھا۔ ذرائع کے مطابق سندھ حکومت نے معاملہ پارلیمان اور وفاق میں اعلی سطح پر اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*