بنیادی صفحہ -> اداریہ،کالم -> اللہ کے دوست

اللہ کے دوست

اللہ کے دوست
مجیداحمد جائی
اللہ کے دوست!یہ حروف تصور میں آتے ہی بہت سے سوالات آپ کے ذہن میں اُبھرتے ہوں گے اور ابھرنے بھی چاہیے۔آپ خیالات کے گھوڑے دوڑائیے اور میں وقاص اسلم کی کتاب ”اللہ کے دوست“کی بات کرتا ہوں۔
وقاص اسلم کو ایک عشرے سے جانتا ہوں۔ان سے میری واقفیت تب سے ہے جب ان کی اور میری کہانیاں روزنامہ خبریں کے بچوں کے ایڈیشن میں ساتھ ساتھ شائع ہوتی تھیں۔قدرت میرے اوپر ہر وقت مہربان رہتی ہے۔یہ بھی قدرت کا ہی کرشمہ تھا کہ بہت جلد وقاص اسلم سے ملاقات بھی ہو گئی۔وقاص اسلم نوجوان ہے اور پُروقار شخصیت کا مالک بھی۔مسکراہٹ ان کی غلام بنی رہتی ہے۔جیسے بھی حالات ہوں ان کے لبوں پر مسکراہٹ کے پھول کھلے رہتے ہیں۔میری باتوں پہ بے شک یقین نہ کریں لیکن ایک بار ان سے مل لیجیے پھر آپ بھی گن گاتے،قصیدے پڑھتے ملیں گے۔
وقاص اسلم مخلص،ملنسار اور محبت بانٹنے والا کتاب دوست ہے۔مجھے بے حد خوشی ہے کہ یہ کتاب سے جڑے ہیں اور کتب بینی کے فروغ کے لیے ہمہ تن کوشاں ہیں۔بچوں کا گلستان میں اپنے فرائض باخوبی نبھارہے ہیں۔یہ شخص پُر امید اور جدوجہد کرنے والا ہے۔
ہر انسان میں خوبیاں اور خامیاں ہوتی ہیں۔وقاص اسلم میں خوبیاں بہت اور خامیاں بہت قلیل ہیں۔ایک خامی یہ بھی ہے کہ کم رابطے میں آتے ہیں۔وقاص اسلم تین کتابوں کے مصنف بن گئے ہیں۔ان کی پہلی کتاب”عظیم قربانی“اور میری کتاب”اخلاق کا انعام“2016میں ایک ساتھ شائع ہوئیں۔وقاص اسلم خالصتاًبچوں کے لیے لکھتے ہیں اور میں بچوں کے لیے کم اور بڑوں کے لیے زیادہ لکھتا ہوں۔مجھے بے حد خوشی ہے کہ وقاص اسلم ابھی جوان ہے اور ان کا قلم ان سے بھی زیادہ جوان ہے۔ماشاء اللہ ان کی سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم پر لکھی گئی بچوں کے لیے خوبصورت کتاب”اللہ کے دوست“بھی شائع ہو کر مارکیٹ میں شہر ت پا چکی ہے۔
”اللہ کے دوست“کا سرورق خوبصورت ہے اور ایک کلاس کا منظر پیش کر رہا ہے جس میں استاد اپنے طالب علموں کو پڑھا رہے ہیں۔یہ کتاب 96صفحات پر اعلی کاغذ پرمعیاری اور بہترین کتاب ہے۔گلستان کتاب گھر نے 2019میں بڑے اہتمام کے ساتھ اسے شائع کیا ہے۔کتاب کی قیمت 150روپے ہے۔
”اللہ کے دوست“کا انتساب ”اُس عظیم ترین ہستی کے نام کیا گیا ہے جو وجہ تخلیق ِکائنات اور سید الانبیاء ہیں یعنی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم“۔سیرت گلدستہ کے عنوان سے ”نورالامین“لکھتے ہیں کہ اس کتاب کو اسلامی سیرت کا ایک گل دستہ کہا جائے تو شاید غلط نہ ہوگا جس میں مختلف پھولوں کی خوشبو رچی بسی ہے۔حافظ حمزہ شہزاد کچھ یوں رقم طراز ہیں ”اس کتاب کا تعلق آپ ؐ کی سنتوں اور تعلیمات سے ہے۔احادیث کو کہانیوں میں نگینوں کی طرح جڑا گیا ہے۔“عبید اللہ انور لکھتے ہیں ”مجھے یقین ہے کہ یہ نوجوان ادیب مستقبل میں سرزمین کبیر والا کا نام فخرسے بلند کرنے میں اپنا پھر پور حصہ ڈالے گا۔“
”اللہ کے دوست“کے پیش لفظ میں لکھاری لکھتے ہیں ”اللہ تعالیٰ نے میری بہت مدد فرمائی ہے“۔سولہ کہانیاں صرف 26دنوں میں مکمل کرنا یقینا بہت بڑا کارنامہ ہے۔”اللہ کے دوست“16کہانیوں پر مشتمل ہے جس میں ہر کہانی اپنے اندر کشش رکھتی ہے۔جملوں کی بناوٹ کہیں کہیں ضرور پریشان کرتی ہے لیکن مربوط انداز میں سادہ اور عام فہم اسلوب سے مزین ہے۔
کامیابی کا راز،دودن،اللہ کے دوست اُچھوتے موضوع پر لکھی گئی خوبصورت کہانیاں ہیں۔”اللہ کے دوست“کہانی کی بات کی جائے تو ایسا دیکھنے کو نہیں ملتا۔ہم گدگروں،فقیروں کی تذلیل کرنے کے لئے آخری حد بھی پار کرجاتے ہیں۔مشاہداتی تناظر میں دیکھیں تو شادی بیاہ،یا کسی دعوت پر یا صبح سویرے گھر کی دہلیز پر جب فقیرآتے ہیں تو ہمارے رویے نامناسب ہوجاتے ہیں۔زمین و آسمان کے قلابے ملا کرہزاروں گالیاں اُس کے نام کر دیتے ہیں۔لیکن وقاص اسلم واقعی داد کے مستحق ہیں کہ اُنہوں نے خوبصورت پیرائے ہن میں،بہترین پلاٹ کی صورت اچھی کہانی بُنی ہے۔یقین کرے معاشرے میں ایسا ہو جائے تو وہ دن دور نہیں جب امیر اور غریب میں کوئی فرق بھی نہ ہو گا۔ اسی طرح جنت میں جانے والے،حقیقی خوشی بھی خوب ہیں۔حقیقی خوشی کے تناظر میں جو پلاٹ فراہم کیا گیا ہے ایسا دیکھنے کو کم ہی ملتا ہے۔انوکھا امتحان میں کمپوزنگ کی غلطیاں موجود ہیں۔
”اللہ کے دوست“کی اشاعت میں وقاص اسلم مبارک باد کے مستحق ہیں اور میں پُر امید ہوں کہ آپ اسی طرح بچوں اور بڑوں کے ذہنوں کی آبیاری کرتے رہیں گے۔انشاء اللہ!۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*