بنیادی صفحہ -> اہم خبریں -> نیوزی لینڈ کی دو مساجد میں دہشتگردی کرنے والے کوعدالت میں پیش کردیا گیا پھر کیا ہوا

نیوزی لینڈ کی دو مساجد میں دہشتگردی کرنے والے کوعدالت میں پیش کردیا گیا پھر کیا ہوا

اس سے پہلے نیوزی لینڈ کی وزیراعظم بھی کہہ چکیں اور اسٹرویلوی وزیراعظم اسکوٹ موریسن بھی بتا چکے کہ وہ بہت مغموم ہیں اور یہ کہنے میں انہیں کوئی قباحت نہیں کہ یہ دہشتگردی ہے.

نیوزی لینڈ کی دو مساجد میں فائرنگ کرنے والے دہشت گرد برینٹن ٹیرینٹ کو 5 اپریل تک ریمانڈ پر دے دیا گیا.

دائیں بازو کا سفید فام نسل پرست 28 سالہ برینٹن ٹیرینٹ آسٹریلوی شہری ہے، ملزم کو آج ہتھکڑی لگا کر کرائسٹ چرچ کی عدالت میں پیش کیا گیا۔

عدالت میں پیشی کے موقع پر باہر سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے جبکہ سیکورٹی وجوہات کے باعث سماعت بند کمرے میں کی گئی ۔

کیس کی سماعت کے دوران ایک مشتعل شخص نے چاقو لے کر عدالت میں گھسنے کی کوشش کی تاہم داخلے پر پابندی کے سبب چاقو بردار شخص عدالت میں داخل نہ ہوسکا۔

پولیس کے مطابق 28 سالہ حملہ آور پر فی الحال قتل کا الزام عائد کیا گیا ہے، دیگر الزامات بعد میں لگیں گے۔

پولیس کے مطابق حملہ آور زیر حراست ہی رہے گا، اس کی جانب سے ضمانت کی کوئی درخواست نہیں کی گئی۔

واقعے کے بعد نیوزی لینڈ بھر میں پولیس کا گشت بڑھا دیا گیا ہے اور مساجد کی سیکیورٹی بھی سخت کردی گئی ہے

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*