بنیادی صفحہ -> دنیا کی خبریں -> طیب اردگان کی اہلیہ نے بھارتی وزیراعظم کو منہ دکھانے کے قابل نہ چھوڑا
طیب اردگان

طیب اردگان کی اہلیہ نے بھارتی وزیراعظم کو منہ دکھانے کے قابل نہ چھوڑا

لاہور(ویب ڈیسک): گزشتہ دنوں ارجنٹائن کے دارالحکومت بیونس آئرس میں G-20 ممالک کے سربراہاں کی میٹنگ ہوئی جن میں دنیاکے بیس بڑے ممالک کے صدور، وزرائے اعظم اورچانسلرزنے شرکت کی. G-20 میں شامل ہونے کی وجہ سے بھارتی وزیراعظم نریندرامودی بھی اس میں شریک تھے اورحسب معمول عالمی رہنماؤں سے بلاوجہ بے تکلف ہونے کی کوششیں کرتے رہے. ایسی ہی ایک میٹنگ میں ان کا سامنا ترک صدرطیب اردگان کی اہلیہ سے ہوگیا. دونوں شخصیات ایک ساتھ بیٹھی تھیں تو اس انٹریکشن کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہورہی ہے جس میں نریندرامودی طیب اردگان کی اہلیہ کی طرف دیکھتے ہیں لیکن وہ دوسری طرف منہ کرلیتی ہیں اورنریندرامودی کو بالکل نظراندازکرتی ہیں. بھارتی وزیراعظم کو بھی احساس ہوجاتاہے وہ ادھرادھردیکھنا شروع کردیتے ہیں لیکن بے عزتی کے نمایاں تاثرات ان کے چہرے سے جھلک رہے ہوتےہیں اس ویڈیو کو اب تک لاکھوں لوگ شیئرکرچکے ہیں.

ڈونلڈ ٹرمپ کی روسی ہم منصب ولادی میرپیوٹن سے ملاقات منسوخ

لاہور(ویب ڈیسک): جی 20 ممالک کا سالانہ اجلاس بیونس آئرس میں جاری ہے جس میں دنیا بھرسے بیس بڑے ممالک کے سربراہان شامل ہیں اوراجلاس کی سائیڈلائنزپرسربراہان مملکت کی ملاقاتیں بھی جاری ہیں. انہی سائیڈلائنزپرامریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ اورروسی ہم منصب ولادی میر پیوٹن کی ملاقات بھی طے تھی جسے امریکہ کی جانب سے گزشتہ روزمنسوخ کردیا گیا. اس حوالے سے روسی میڈیا کا کہنا تھا کہ صدرڈونلڈٹرمپ اورپیوٹن کی ملاقات منسوخ ہونےسےکشیدگی بڑھےگی. صدرپیوٹن امریکی ہم منصب سےبات چیت جاری رکھنےکےخواہشمندہیں. جی20اجلاس کےاستقبالیہ اورکنسرٹ کےموقع پرگفتگوہوسکتی ہے. صدرپیوٹن اورصدرٹرمپ کےدرمیان اب بھی ملاقات کاامکان ہے.ملاقات کےلیےامریکاکوپہل کرناہوگا. صدرٹرمپ نےصدرپیوٹن سےطےشدہ ملاقات منسوخ کرنےکااعلان کیاتھا.امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اجلاس میں شرکت کے لیے آج ارجنٹینا پہنچے جہاں وہ مختلف ممالک کے سربراہان سے ملاقاتیں کریں گے جب کہ اجلاس میں شرکت کے لیے دیگر رہنما بھی ارجنٹینا پہنچنا شروع ہوگئے۔اجلاس میں 19 ممالک کے سربراہان اور یورپی یونین کے نمائندے شرکت کریں گے، رواں سال ہونے والے اجلاس میں امریکا اور چین کے درمیان تجارتی کشیدگی کے علاوہ دیگر کئی مسائل زیر بحث آنے کی توقع ہے۔سب سکی نظریں امریکا اور چین کے سربراہان مملکت کی ملاقات، امریکا، میکسیکو اور کینڈا کے درمیان معاہدہ بھی شامل ہے جب کہ سعودہ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی متوقع آمد پر صحافی جمال خاشقجی کے قتل پر احتجاج کا بھی امکان ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*