دنیا کی سب سے سستی برقی کار ،قیمت صرف 930 ڈالر

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک)مہنگائی کے اس دور میں چینی کمپنی نے سستی ترین کار متارف کرادی ہے ،جس کی قیمت صرف 930 ڈالر رکھی گئی ہے انتہائی کم قیمت والی کار اگر آپ چاہیں تو گھر بیٹھے بھی آرڈر کر سکتے ہیں اور اپ کو آپ کے پتے پر ارسال بھی کی جاسکتی ہے ۔

چینی کمپنی نے اس کار کا نام چینگلی رکھا ہے اور سے چینگ زوڑائل کار انڈسٹری نے تیار کیا ہے ۔یہ دنیا کی برقی کاروں میں سے سب سے سستی کار ہے اور جس سے ظاہر ہوتا ہے دنیا برقی آلات کی جانب گامزن ہے ۔
اس وقت چینگلی کار کا چرچا عام ہے جس پر آن لائن بات کی جارہی ہے۔ پاکستانی روپوں میں اس کی قیمت ڈیڑھ لاکھ روپے ہے جبکہ طاقتور اور بڑی بیٹریوں کے ساتھ اس کی قیمت 1200 ڈالر ہے جو دو لاکھ روپے کے لگ بھگ ہے۔

کمپنی کے مطابق یہ دنیا کی سستی ترین برقی کار ہے جو جیب پر بھاری نہیں اور اس کی قوت ایک ہارس پاور سے کچھ زائد ہے لیکن یہ زیادہ سے زیادہ 30 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کرسکتی ہے۔ لیکن اس قیمت میں بھی گاڑی کے اندر دیگر اہم لوازمات شامل ہیں جن میں ایئر کنڈیشننگ، سسپینشن، ہیٹر، ریڈیو اور ریورس کیمرہ بھی لگا ہوا ہے۔ لیکن اس کی سب سے حیرت انگیز بات یہ ہے کہ آپ آن لائن آرڈر دیجئے اور کار آپ کے گھر تک پہنچادی جائے گی۔

اس کے لیے کمپنی کی ویب سائٹ پر جائیں اور آن لائن آرڈر دیدیجئے جبکہ یہی کار اب علی بابا ویب سائٹ پر بھی فروخت کے لیے پیش کردی گئی ہے۔ اس کار کی لمبائی ڈھائی میٹر، چوڑائی ڈٰیڑھ میٹر اور بلندی 1.80 ہے۔ ایک مرتبہ بیٹری چارج کرنے پر آپ 40 سے 100 کلومیٹر کا سفر طے کرسکتے ہیں۔ اس میں 800، 1000 اور 1200 واٹ کی بیٹریاں لگ سکتی ہیں جو اپنے لحاظ سے 7 تا 10 گھنٹے میں چارج ہوتی ہیں۔

کار کے سب سے کم خرچ ورڑن میں دو افراد بیٹھ سکتے ہیں جبکہ تین نشستوں والی کار کی قیمت 1500 ڈالر رکھی ہے۔ نت نئی کاروں پر تبصرہ کرنے والے بلاگر جیسن ٹورچنسکی نے اس پر ویڈیو بنائی ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ رقم کم ہے اور خود کار بھی محدود خواص رکھتی ہے۔ اگرچہ اس کی قیمت گالف کے میدانوں کی کار سے بھی آدھی ہے لیکن یہ ڈھلواں سطح پر نہیں چڑھ سکتی۔دیگر ناقدین نے اسے نہایت کم قیمت پر ایک ماحول دوست ایجاد قرار دیا ہے۔