سوئس بینکوں میں پاکستانیوں کی دولت 377 ملین ڈالررہ گئی

اسلام آباد(ماینٹرنگ ڈیسک) سوئس بینکوں میں پاکستانی شہریوں کی رکھی گئی دولت 2019ء میں مزید53فیصد گرکر377ملین ڈالر تک رہ گئی۔

سوئٹزر لینڈ دولت چھپانے کیلیے پاکستانیوں کاپسندیدہ ٹھکانہ نہیں رہا۔ سوئس نیشنل بینک کی سالانہ رپورٹ کے مطابق یہاں کے بینکوں میں پاکستانی شہریوں کی رکھی گئی دولت 2019 میں مزید53فیصد گرکر377ملین ڈالر تک رہ گئی۔

واضح رہے سابق وزیراعظم شاہ خاقان عباسی اورموجودہ وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے دو ایمنسٹی سکیموں کے باوجود پاکستان اس کا فائدہ نہیں اٹھا پایا۔

اقتصادی تعاون اورترقی کی تنظیم کی طرف سے معلومات کے تبادلے میں پکڑے جانے کے باوجود قریباً 200 پاکستانیوں کوان اسکیموں کی بدولت کالا دھن سفید کرنے کی اجازت دی گئی۔ ایف بی آرکا کمزورانتظامی ڈھانچہ بھی ان معلومات سے فائدہ نہ اٹھانے کی وجہ بنا۔

گذشتہ برس 377ملین ڈالررہنے والی رقم 2018 ء میں 725.2 ملین ڈالر تھی۔پاکستانی پاسپورٹ رکھنے والوں کے اثاثے کم ہونے کا یہ مسلسل چوتھا سال ہے جو 2015ء میں ڈیڑھ ارب ڈالرتھے۔