بنیادی صفحہ -> اداریہ،کالم -> اپنو ں کو اےسے کا ٹتے ہےں بھا ئی جی

اپنو ں کو اےسے کا ٹتے ہےں بھا ئی جی

ضےغم سہےل وارثی
بڑا لکھا ۔ بہت لکھا کہ ےو رپ مےں ےہ ےہ اچھا ، اےسا روےا ،ےہ وہ اخلا ق ، اےسا ہے بھی ، بہت سی اچھا ئےاں ہےں ، جن کی کمی ہما رے معا شر ے مےں پا ئی جا تی ہے ، مگر ،آ ج صر ف ،با ر سلو نا مےں سنا ، دےکھا ، اس کا ذکر کر تے چلےں ، شا ہد ، شا ہد نہےں ، ےقےن کے سا تھ اہل با رسلونا کو برا لگے ، مگر کچھ کو اچھا لگے گا ، شا پ پر کھڑے اےک بند ے کا ےہ جملہ ” اپنوں کو اےسے کا ٹتے ہےن بھا ئی جی“
پا کستان کے حالا ت اےسے ہےں کہ اچھی خا صی تعلےم حا صل کر نے کے بعد بھی سر کا ری ملا زمت تو دورکی بات تعلےم کی قا بلےت کے مطا بق نو کری نہےں ملتی ، جو لو گ کچھ جمع پو نجی رکھتے ہےں ، وہ سو چتے ہےں کہ ےو رپ ےا بےر ون ممالک چا نس ما رنے کا سو چتے ہےں، ان کا خےا ل ےہ ہو تا ہے کہ ےو رپ پہنچ کر ان کی لا ئف آ سا ن ہو جا ئے گی ، اےسے تےسے جب وہ ےورپ پہنچتے ہےں ، تو حقےقت مےں ان کو بہت سی مشکلا ت کا سامنا کر نا پڑ تا ہے ، اےک صا حب سے با رسلو نا مےں ملا قا ت ہو ئی ،شا پ کےپر سے وہ کچھ معلو ما ت رہے تھے کہ ےہاں قانونی پےپر ورک کےسے ہو گا اور اس مےں کےا اخرا جا ت ہےں ، ہم بھی پا س کھڑ ے ان دو اشخا ص کی با تےں سنےں لگ گے ، شا پ کےپر والے صا حب بتا رہے تھے کہ کو بند اسپےن آ تا ہے وہ ےہاں کے مقامی اےک آ فس جا تا ہے اپنے پا سپو رٹ کے سا تھ اور آ فس والے اس کی انٹری کر دےتے ہےں، اب وہ بند ہ با رسلو نا تےن سا ل تک قانون کی اجا ز ت کے سا تھ رہ سکتا ہے ، مگر جا ب نہےں کر سکتا ، ےہ تےن سا ل اس کو اس لےے اجا ز ت دی جا تی ہے کہ وہ ےہاں کی مقا می زبا ن سےکھے اور قانون ےہاں کے سمجھے ، تےن سا ل مکمل ہو نے کے بعد وہ جا ب ڈ ھو نڈ ے اور اس جا ب کی بنےا د پرےہاں کا پےپر ورک اپلا ئی کر سکتا ہے ، پھر اس کو وےز ہ ٹا ئپ کا رڈ مل جا تا ، اور ہر سا ل اس کو رےنو ےو کر وانا پڑتا ہے ،سا منے والے بند ے نے شا پ کےپر سے سوال کےا کہ مےر ے تےن سا ل ہو نے کو ہےں ، زبان کی سند وغےر ہ بھی لے لی مگر اب جا ب نہےں مل رہی ، کو ئی ےہاں کا مقامی اسپےن کا بز نس مےن جا ب نہےں دے رہا ،اور اپنا پا کستانی جاب دےنے کے پےپر ورک کے لےے پےسے ما نگ رہا ہے ، اسپےن کا تو کو ئی بند ہ جا ب نہےں اےسے دے گا ، وہ کےوں ، وہ اس لےے کہ شروع مےں کسی ضر ورت مند کو دےکھ کر ےہاں کے مقا می لو گ جا ب دےتے تھے ، مگر پا کستاےنوں نے اےسے کا رنا مے کےے کہ اب اےسے کو ئی جا ب نہےں دےتا ، کا رنا مے کےسے ، کا رنا مے ےہ تھے کہ ، جب مقامی بند ے کی شاپ ےا اس کے کا رو با ر مےں کا م کر تے تو کا م کر تے تصو ےر ےں بنا لےتے تھے اور پھر مقامی آ فس مےں جا کر درخو است جمع کر وا دےتے تھے کہ ےہ دےکھےں ہم سے کا م کر وا تا ہے اور نہ پےسے دےتا نہ پےپر ورک کے لےے پےپر مکمل کر واتا ہے ، لو جی اب بتا ﺅ اس فراڈ کے بعد کون اعتما د کر ئے گا ، کو ئی نہےں کر ئے گا ، اور اپنے پا کستانی بز نس مےن ےا جن کے کا رو بار وہ بھی پےسے ما نگتے اس پےپر ورک کے لےے ، کتنے پےسے ما نگتے ہےں ، بھا ئی جی آ ج کل ما رکےٹ کا رےٹ چل رہا ہے کہ تقر بےا آ ٹھ ہز ار ، تو آ ٹھ ہزار سب اسپےن کی سر کا ر کو جا تا ہے ، ہاں جا تا ہے مگر دو تےن ہز ار تک جو کچھ ما ہ تک وہ اس بند ے کا ٹےکس ادا کر تے ہےں ، چلو جا ب تو مل جا ئے گی ،آ ٹھ ہزار دے کر اور پےپر مکمل ہو جا ئےں گے ، ہاں پےپر مکمل ہو جا ئےں گے مگر وہ شاپ ےا کار وبا ر والا تم کو جا ب پھر بھی نہےں دے گا ، پھر ، پھر ےہ کہ وہ تم کا صر ف چھ ما ہ ےا تم کے سا تھ جتنے فکس ما ہ ہو ں گے اتنے کا ٹےکس ادا کےا جا ئے گا ، با قی ، با قی اس کی جےب مےں بھا ئی جی ، کےا ، ہاں اپنوں کو اےسے کا ٹتے ہےں بھا ئی جی،،،
ےہاں سوال ےہ پےدا ہو تا ہے کہ ےہ جو کا روائی تما م ہو تی اور اتنے اےکسٹرا پےسے لےے جا تے اور وہ اپنوں کی جےب مےں جا تے ہےں تو کےا اسپےن کی سرکا ر اس با رے معلوما ت رکھتی ہے ےا نہےں ، اگر نہےں رکھتی تو ہماری کےمونٹی کے سےا سی سما جی جو تصو ےر ےں لگا تے نہےں تھکتے ان کو اصل مےں کمےو نٹی کے لےے رول ادا کر نا چا ہےے ، کےا ان کو کر نا چا ہےے ، ان کو ےہ کر نا چا ہےے کہ تما م پا کستا نی کےمو نٹی کے بزنس مےن اور کا ر و با ری حضرا ت کو اکٹھا کر کے ارادہ کےا جا ئے کہ وہ اب کسی ضر ورت مند سے پےپر ورک کے لےے اےکسٹر ا پےسے نہےں لےں گے ،اس قر اداد کے بعد کو ئی با ز نہ آ ئے تو اس کو با رسلو نا کی کےمو نٹی مےں اچھا نہ سمجھا جا ئے،
ہو سکتا جو اس کا لم مےں معلو ما ت فر اہم کی گئی وہ کم ہو ےا ادھو ری ہو ، اور تما م پا کستانی کےمو نٹی کے لےے تنقےد نہےں ، مگر دےکھنے مےں ےہ آ ےا کہ کو ئی اےک فےصد کو ئی کا ر و با ری ہو گا جو پےپر ورک کے لےے اےکسٹرا پےسے نہےں لےتا ہو گا ،، جو لو گ اےکسٹرا پےسے لےتے اور سال مےں جب ان کے گا ﺅ ں مےں کہا جا تا ہو گا کہ حا جی صا حب نے پو رے اےک لا کھ کا بےل دےا ہے تو ےقےن ما نے اس کا کو ئی ثو اب نہےں ملنے والا ،
با ر سلونا مےں حا فظ عبد الراز ق جےسے اور بھی لو گ ہےں جو اپنی کےمو نٹی کے لےے کو شا ں رہتے ہےں ، مگر خد مت کا مز ہ تب آ نا جب اس طر ح کی لو ٹ ما ر ختم ہو کہ اےک ضر ورت مند کی مجبو ری دےکھتے ہو ئی اس سے فا لتو پےسے لےے جا ئےں ،،
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*