Buy website traffic cheap

کارکنان

آر یا پار ….. فیصلہ مہینوں یا ہفتوں میں نہیں بلکہ دنوں میں

آر یا پار ….. فیصلہ مہینوں یا ہفتوں میں نہیں دنوں میں…..سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں نواز شریف اور مریم نواز کیخلاف ٹرائل مکمل کرنے کیلئے احتساب عدالت کی درخواست پر سماعت ہوئی،…چیف جسٹس پاکستان نے احتساب عدالت کو نواز شریف اور مریم نواز کو تینوں ریفرنسز کا ایک ماہ میں فیصلہ سنانے کا حکم دیدیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا ملزمان بھی پریشان اور قوم بھی ذہنی اذیت کا شکار ہے، اب ان کیسز کا فیصلہ ہونا چاہے۔

—————————–
یہ خبر بھی پڑھیئے

فلسطینیوں کے ہمدرد امریکی شیف کی فرانس میں پراسرار موت
63 سالہ بورڈین فرانس میں فلسطینیوں کی حمایت کے حصول کیلئے اپنے ایک پروگرام کیلئے مقیم تھے
پیرس(یواین پی)فلسطینیوں کے حقوق کے حامی ایک عالمی شہرت یافتہ امریکی شیف اور فوٹو گرافر انٹونی بورڈین کو فرانس کے ایک ہوٹل میں مردہ پایا گیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق 63 سالہ بورڈین فرانس میں فلسطینیوں کی حمایت کے حصول کے لیے اپنے ایک پروگرام کے لیے مقیم تھے۔اپنے تصویری پروگرام جس میں وہ القدس، غزہ اور غرب اردن کے بارے میں حمایت کے حصول کے لیے کوشاں تھے پر اسرائیل کی طرف سے شدید تنقید کی گئی تھی۔وہ اپنے مختلف تصویری پروگراموں میں صہیونی ریاست کے فلسطینی قوم پر جرائم کو بے نقاب کرنے کی قابل تحسین کوشش کرتے رہے ہیں۔سنہ 2014 کو جب اسرائیل نے غزہ پر جنگ مسلط کی تو اس وقت بھی بورڈین نے ساحل پر چلتے ہوئے ایک شخص کا خاکہ تیار کیا تھا نے اپنے ہاتھوں میں ایک زخمی بچی کو اٹھا رکھا تھا۔ یہ خاکہ اسرائیلی ریاستی دہشت گردی کی ایک علامت تھا جس پرصہیونی ریاست بورڈین پر سخت چراغ پا ہوئی تھی۔فرانس میں قیام کے دوران فلسطینیوں کے حامی عالمی شہرت یافتہ شیف کی موت کے بارے میں کئی طرح کی قیاس آرائیاں کی جا رہی ہیں۔ ان کے مجرمانہ قتل میں اسرائیل کے ملوث ہونے کا بھی شبہ ہے۔جنوبی افریقا نے کہا ہے کہ وہ سلامتی کونسل کے رکن کی حیثیت سے کونسل میں فلسطینیوں کے حقوق کی بھرپور حمایت جاری رکھے گا۔ نیویارک میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں جنوبی افریقا کی وزیرخارجہ وعالمی تعلقات لینڈیوی نونیساپا سیسولو نے کہا کہ ان کا ملک فلسطینیوں کے حقوق کی پرزور حمایت کرنے والوں میں شامل ہے۔ ہم فلسطینی قوم کی آزادی کے حق کے پرزور حامی ہیں۔ فلسطینیوں کی حمایت اور مدد جاری رکھیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ فلسطین اور اسرائیل کو باہمی اختلافات دور کرنے کے لیے بات چیت کے عمل میں تاخیر نہیں کرنی چاہیے۔پریس کانفرنس کے دوران اخبار القدس العربی کی جانب سے استفسار کیا گیا کہ آیا فلسطینی قوم اپنی آزادی کی جد و جہد کیلئے جنوبی افریقا پر اعتماد کرسکتے ہیں تو ان کاکہنا تھا کہ جنوبی افریقا ماضی میں بھی فلسطینیوں کے حقوق کا پرزور حامی رہا ہے اور یہ حمایت آئندہ بھی جاری رکھی جائے گی۔خیال رہے کہ جنرل اسمبلی نے اگلے دو سال کیلئے پانچ ممالک جن میں جنوبی افریقا بھی شامل ہے کو سلامتی کونسل کے ارکان میں شامل کیا ہے۔ ان میں انڈونیشیا، جرمنی اور بیلجیم بھی شامل ہیں۔