Buy website traffic cheap


انٹرنیشنل پریس انسٹی ٹیوٹ کا پی ٹی وی سے سیاسی سنسرشپ کے خاتمے کا خیرمقدم

لاہور: دنیا بھر کے مدیران‘میڈیا ایگزیکٹو اور معروف صحافیوں پر مشتمل عالمی نیٹ ورک انٹرنیشنل پریس انسٹِٹیوٹ (آئی پی آئی) نے پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے سرکاری ذرائع ابلاغ پر نافذ سیاسی سینسر شپ کے خاتمے کے اعلان کا خیر مقدم کیا ہے۔گزشتہ روز عالمی نیٹ ورک انٹرنیشنل پریس انسٹِٹیوٹ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر باربرا ٹرائینفائی نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ حکومت پاکستان کے بیان کے مطابق وزیراعظم کی جانب سے سرکاری ذرائع ابلاغ کو ادارتی آادی دیے جانے کا اعلان پاکستان میں پریس کی آزادی کی طرف ایک اہم قدم ہے۔انہوں نے زور دیا کہ حکومت اس قسم کے وعدوں کو پوری طرح عملی جامہ بھی پہنائے اور خبروں کے مواد کے سلسلے میں سرکاری ذرائع ابلاغ کی انتظامیہ پر اثر انداز ہونے سے گریز کو یقینی بنائے۔وفاقی وزیر کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہوئے آئی پی آئی نے آزادانہ صحافت کو درپیش مشکلات پر بھی تشویش کا اظہار کیا۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں آزاد میڈیا کو سنگین دھمکیوں کا سامنا ہے جبکہ نیوز چینلز کی نشریات کو روکے جانے اور اخباروں کی ترسیل میں رکاوٹیں بھی عائد کی گئیں۔اپنے بیان میں ان کا کہنا تھا کہ ہم نے اپنے تمام تر خدشات دور کرنے کیلئے پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ پاکستان میں صحافتی ادارے اور صحافی آزادانہ صحافت کرسکیں‘تا کہ پاکستانی عوام کو حقائق پر مبنی خبروں تک رسائی ہو۔آئی پی آئی نے انتخابات سے قبل 12 جون اور بعد ازاں 13 اگست کو پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کو لکھے گئے اپنے خط کا اعادہ بھی کیا جس میں انہوں نے پاکستان میں صحافتی آزادی کو محدود کرنے کی کوششوں پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا تھا۔واضح رہے کہ رواں ہفتے جمعرات کو وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے اعلان کیا تھا کہ حکومت نے سرکاری ذرائع ابلاغ سے سیاسی سینسر شپ کاخاتمہ کردیا ہے اور پاکستان ٹیلی ویڑن (پی ٹی وی) اور ریڈیو پاکستان کو خبروں کے مواد کے سلسلے میں ادارتی آزادی حاصل ہے۔