Buy website traffic cheap

کمیشن

این اے اٹھا ون ، سا بق وز یر اعظم کا حلقہ

ضیغم سہیل وارثی
این اے اٹھا ون ، سا بق وز یر اعظم کا حلقہ
سیا ست دان ، بڑے بڑے دعو ے نہ کر یں، پھر وہ سیا ست دان ہی کیا،سا ت لا کھ کی آ با دی ایک یو نی ورسٹی بھی نہیں، تعلیم نہیں ہو گی تو سیاست دان ایسے ہی قد م جما ئیں گے ، مگر جن کے ہا تھ قلم تھے وہ کیا کر تے رہیں ہیں ، ہم تو شا عر کی شا عر ی میں کہتے ہیں ،
اپنا شیو ہ کہ جلا تے ہیں اند ھیر وں میں چر اغ
ان کی ساز ش کہ ز ما نے میں یو نہی را ت رہے
الیکشن کی آمد ، ہر حلقے میں سیا ست دان ، اپنی حب الو طنی، اپنے علا قے سے لگا ؤ ، اور کچھ ، جو تر قیا تی کا م کیے ہیں ، ان کو گنو ا کر اپنے علا قے کے لو گوں سے ووٹ لیں گے ، کچھ روایتی انداز کی الیکشن کمپین ہو تی ہے ، جیسے ایک بڑ ے کو قا بو کر لیں تو پو ران خاندا ن اس کے پیچھے چلتا ہے ، اس سے بھی زیا دہ ہو تا ہے ، گا ؤں کا معتبر شخص کسی ایک طر ف ہو جا ئے تو پو را گا ؤں اس کا کہا ما نتا ہے ، اب صو رت حال کچھ مختلف ہے ، سو شل میڈ یا کا دور ہے ، کچھ حقیقت پر لکھا یا بو لا جا ئے تو اس کو اہمیت دی جا تی ہے ، آ ج کا کالم اپنے حلقے کے با رے ہے ، کیو نکہ ہم اس حلقے سے ہیں ، کا فی ٹا ئم سے پر انے سیا ست دانوں کی سیا ست کو دیکھتے آ ئے ہیں تو ، ہم چا ہیں گے عام عوام بھی اس طر ف سو چے اور اب کی با ر بہتر فیصلہ کر ئے ، این اے اٹھا ون ، یہ حلقہ ، گو جر خاں کا علا قہ ، اور سا بق وز یر اعظم را جہ پر ویز اشر ف صاحب کا حلقہ بھی یہی ہے ، زیا دہ ما ضی میں نہیں جا تے ، پچا سی سے با ت شر وع کر تے ہیں ، پچا سی سے لے کر مشر ف کے آ نے سے پہلے مسلم لیگ ن کے چوہد ری ریا ض صا حب ایم این اے اور ایم پی اے رہے ہیں ، ان کے بھا ئی بھی ایک بار ایم این اے یہاں سے رہے ہیں ، چا ر بار ایم این اے اور ایم پی اے کی سیٹ چو ہد ری ریا ض صا حب کے پا س رہی ہے ، اور اس دوران ایک یو نی ورسٹی کا وجو د لا نے میں کا میا ب نہیں رہے ، ایک بار صو با ئی وز یر بھی رہے تھے ،آ ج گو جر خاں کے شہر جا ئیں تو گند ، اندر با زار میں کچی سڑ ک ، پا نی کی نکا سی کا کو ئی نظا م نہیں تو اندازہ کر یں اس وقت ریا ض صا حب نے کیا علا قے کی خد مت کی ہو گی ، مشر ف صا حب آ ئے تو ان چو ہد ری صا حب کے بھا ئی ، ق لیگ میں شا مل ہو گے ،ریا ض صا حب فخر سے کہتے رہے کہ مشکل میں ہم اپنے قا ئد کے سا تھ ہیں ، پچھلے الیکشن میں جب ن لیگ نے ان صا حب کو ٹکٹ نہیں دیا تو پیپلز پا رٹی کے امید وار سا بق وز یر اعظم را جہ پر ویز اشر ف کی حما ئت کی ، اور اپنی پا رٹی ن لیگ کے راجہ جا و ید اخلا ص کے خلا ف الیکشن مہم میں رہے ، آ ج تک دعو ہ قا ئم کہ اپنے قا ئد کے سا تھ رہے ہیں ، دو ہز ار آ ٹھ میں ن لیگ کے ٹکٹ سے قو می اسمبلی کے لیے الیکشن لڑا تو اس وقت ان کے خلا ف ق لیگ سے را جہ جا وید اخلا ص کے فر ز ند تھے ، اخبا ر کے انٹر ویو کے لیے ریا ض صا حب کی طر ف گیا تو انہوں نے سا تھ والے گا ؤں میں جانا تھا ، وہاں سا تھ گیا ، تو وہاں یہی ریا ض صا حب لو گوں کو تا ثر دینے کی کو شش کر رہے تھے کہ راجہ جا وید اخلا ص ن لیگ چھو ڑ کر گے ہیں ، اور اپنے ق لیگ میں رہ کر انہوں نے بطو ر ضلع نا ظم علا قے کے لیے کو ئی کا م نہیں کیے ہیں تو ان کے بیٹے کو ووٹ نہیں ملنا چا ہیے ، اب جو اٹھا رہ کے الیکشن ہو نے والے ہیں ، اس میں یہی ریا ض صاحب ن کے ٹکٹ پر صو با ئی اسمبلی کے لیے اور قومی کے لیے را جہ جا وید اخلا ص ہو ں گے، اب ریا ض صا حب کی ٹیم میں وہی شخص جس کے با رے عوام میں تا ثر دیتے تھے کہ اس میں وفا نہیں اور پا رٹی چھو ڑ کر گیا ہے ، تو عر ض اتنی سی کہ ، ریا ض صا حب اب ووٹ ما نگنے کے لیے جا ئیں گے تو راجہ جا وید اخلا ص کے بار ے کیا ارشا د فر ما ئیں گے ، یہ سیا ستدان عوام کو بے وقو ف سمجھتے ہیں یا بے وقو ف بنا نے کی کو شش کر تے ہیں ۔
را جہ جا وید اخلا ص صا حب پچھلے الیکشن سے ن کے ٹکٹ سے یہاں سے ایم این اے بنے تھے ،ان کے پا نچ سا ل میں خو ب وعد ے کیے گے ،یو نی و رسٹی کے بار ے بہت بار ارشا د بھی فر ما یا کہ سی ایم سے مل کر یو نی ور سٹی کے لیے پیسہ لے رہے ہیں ،مگر حکومت کا دور ختم ہو ا ،یو نی ورسٹی نہیں بن سکی، را جہ صا حب نے گو جر خاں شہر میں ، لا کھوں لگا کر ایک پا رک بنا یا ہے ،اس پا رک کو بنے ابھی دو تین سا ل ہو ئے تو اس کی حا لت ایسی جیسے تو پ کے بم ما رے گے ہیں ، کر سیوں ،اور جو وہاں جھو لے بنا ئے گے تھے، بیٹھنے کی جگہ ، سب کھنڈ ر کا منظر پیش کر رہے ہیں ،شہر میں تھوڑی سی با رش ہو جا ئے تو کپڑ ے بچا کر با زار سے گزر نا پڑتا ہے ، ایک بھی ئنا کا لج سر کا ری نہیں بنا یا گیا ، سا ت لا کھ کی آ با د ی کے علا قے میں کم از کم دو یو نی ور سٹی ہو نی چاہیں ، یہاں ایک بھی نہیں ، اور صرف ایک سر کا ری کا لج ہے، اس کا لج کی عما رت کی حالت دیکھ کر لگتا ہے جیسے قد یم زما نے کے آ ثا ر را جہ صا حب نے محفو ظ کر کے رکھنے ہیں، کیا را جہ صاحب کو فنڈ نہیں ملے ہوں گے، اس کو جو اب کیا ہو سکتاہے ، عوام بہتر سے جا نتی ہے ،
را جہ پر ویز اشر ف صاحب جب وز یر اعظم بنے تو یو نی ورسٹی کا اعلا ن کیا ،مگر یو نی ور سٹی صرف فا ئل تک رہی ، ان کے دور میں اربوں کے فنڈ آ ئے مگر علا قے کی حالت ابتر ہے ، افسو س ہی کیا جا سکتا ہے ، سا تھ افسو س ان پر جن کے ہا تھ میں قلم رہا ، مگر ، یا لکھانہیں گیا ، عوام کی آ واز نہیں بنا گیا ،یا پھر کو ئی اور وجو ہا ت ، اب کی بار ن لیگ سے قو می اسمبلی کے لیے را جہ جا وید اخلا ص اور صو با ئی کے لیے وہی چو ہد ری صا حب ہیں ، چو ہد ری ریا ض کی جگہ نو جوان سیا ست دان چوہد ری اشتیا ق صا حب کو ٹکٹ ملتا تو نو جو انو ن کی تر جما نی ہو تی اور پر انے سیا ست دانوں سے نجا ت ملتی ، پیپلز پا رٹی سے را جہ پر ویز اشر ف اور ان کے فر زند خرم پر ویز ہیں ،خر م صاحب یو کے ہو تے ہیں اب الیکشن میں انجو ائے کر نے پا کستان آ ئے ہیں ،اور فر ی ہیں تب الیکشن بھی لڑ لیں گے، پر ویز اشر ف اگر جیت جا تے ہیں تو انہوں نے کو ن سے تر قیا ت کام کر وا نے ہیں یہ ما ضی کی کا رکر دگی بتاتی ہے، ہاں ان کے جیتنے سے یہ ہو گا کہ پر ویز اشر ف صا حب اپنی پا رٹی میں نما یاں پوز یشن رکھتے ہیں تو علا قے کا نام بولتا رہے گا ، را جہ جا وید اخلا ص صا حب پچھلے الیکشن میں کا میا ب تھے بس خا مو شی میں رہے اپنی پا رٹی میں اور وقت گزارہ ، مگر پر ویز اشر ف صا حب اس معاملے میں ریا ض اور اخلا ص دو نوں سے آ گے ہیں ، پی ٹی آ ئی سے چو ہد ری عظیم صا حب اور جا وید کو ثر صا حب ہیں ، ریا ض صاحب کے مقا بلے میں جا وید کو ثر صاحب کو کا میا ب ہو نا چا ہیے ، کیونکہ ، ریا ض صا حب نے پہلے چا ر با ری کیا کمال کیا جو اب امید رکھی جا ئے ، جا وید کو ثر صاحب پڑ ھے لکھے ہیں ،اور تعلق بھی پی ٹی آ ئی سے تو امید رکھی جا سکتی ہے ، کہ، پر انے سیا ست دانوں کی نسبت ان کی کا رکر دگی بہتر رہے گی،عوام بہتر فیصلہ کر ئے اور ووٹ اسی کو دے جس سے امید ہو کہ یہ سیا ست دان علا قے کی بہتری کے لیے کا م کر ئے گا ،مگر سا تھ سوال پیدا ہو تا ہے کہ ریا ض جیسے پر انے سیا ست دانوں کو سیاسی پا رٹیاں ٹکٹ ہی کیوں دیتی ہیں ، کیوں سیا سی جماعیتں ٹکٹ دیتے وقت پر انے سیا ست دانوں کی ما ضی کی کا ر کر دگر ی کا مد نظر رکھنا چا ہیے پھر ٹکٹ دینا چا ہیے ۔ کا ش ایسا ہو تو ، صرف ایک علا قے میں نہیں بلکے پو رے ملک میں بہتری آ ئی ، سیا ست دان ، بڑے بڑے دعو ے نہ کر یں، پھر وہ سیا ست دان ہی کیا،سا ت لا کھ کی آ با دی ایک یو نی ورسٹی بھی نہیں، تعلیم نہیں ہو گی تو سیاست دان ایسے ہی قد م جما ئیں گے ، مگر جن کے ہا تھ قلم تھے وہ کیا کر تے رہیں ہیں ، ہم تو شا عر کی شا عر ی میں کہتے ہیں ،
اپنا شیو ہ کہ جلا تے ہیں اند ھیر وں میں چر اغ
ان کی ساز ش کہ ز ما نے میں یو نہی را ت رہے