Buy website traffic cheap


حقانی نیٹ ورک کے سربراہ جلال الدین حقانی انتقال کر گئے

لاہور(ویب ڈیسک): افغان طالبان نے اعلان کیا ہے کہ حقانی نیٹ ورک کے سربراہ جلال الدین حقانی انتقال کر گئے ہیں، اپنی آخری عمر میں انہیں صحت کے مسائل کا سامنا رہا۔جلال الدین حقانی کی وفات کی افواہ دو ہزار پندرہ میں بھی سامنے آئی تھی جس میں کہا گیا تھا وہ تقریباً ایک سال پہلے طبی وجوہ کی بنا پر انتقال کر گئے تھے اور انہیں افغانستان کے مشرقی صوبے خوست میں دفن کردیا گیا تھا۔وہ افغانستان پر روس کے حملے کے بعد مزاحمتی کمانڈر کی حیثیت سے سامنے آئے تھے۔ وہ طالبان اور القاعدہ دونوں کے ساتھ کام کرتے تھے۔ طالبان کی جانب سے حقانی کی موت کے وقت اور مقام کے حوالے سے کوئی تفصیلات سامنے نہیں آئیں۔ ادھر ذرائع نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ جلال الدین حقانی کی موت طویل علالت کی وجہ سے ہوئی اور ان کی تدفین افغانستان میں کی گئی۔افغانستان میں نیٹو اور افغان افواج پر حملوں، کابل سمیت مختلف علاقوں میں شدت پسند واقعات کا الزام حقانی نیٹ ورک پر عائد کیا جاتا رہا ہے۔حقانی نیٹ ورک افغانستان کے شمال مشرقی صوبوں کنڑ اور ننگرہار اور جنوب میں زابل، قندھار اور ہلمند میں مضبوط گروپ کے طور پر پہچانا جاتا ہے۔جلال الدین حقانی کا تعلق افغانستان کے صوبہ پکتیکا سے تھا اور انھوں نے 1980 کی دہائی میں شمالی وزیرستان سے سابقہ سویت یونین کے افغانستان میں قبضے کے دوران منظم کارروائیاں کیں۔