Buy website traffic cheap

پارلیمنٹ

سپریم کورٹ‌ نے تمام سیاسی جماعتوں‌کو خوش کر دیا

سپریم کورٹ‌ نے تمام سیاسی جماعتوں‌کو خوش کر دیا………….سپریم کورٹ نے کاغذات نامزدگی کالعدم قرار دینے سے متعلق لاہور ہائیکورٹ کافیصلہ معطل کردیا۔ ہائیکورٹ کےفیصلے کے خلاف اپیل الیکشن کمیشن نے کی تھی۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ الیکشن وقت پر ہوں گے۔
الیکشن کمیشن کی اپیل پرسپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار نے کی۔ چیف جسٹس نے لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کرتے ہوئےریمارکس دئیے کہ انتخابات 25 جولائی کو ہی ہوں گے. اگر الیکشن میں تاخیر ہوئی تو الیکشن کمیشن ذاتی طور پر ذمہ دار ہو گا

—————————————–
یہ خبر بھی پڑھیئے

پاکستانی سیاسی قیادت انتخابی منشور میں مسئلہ کشمیر کو سرفہرست رکھے۔مولانا غلام نبی نوشہری
انتخابی سرگرمیوں میں کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے لیے جدوجہد کے عزم کا اعادہ کیا جائے
21سالہ نوجوان قیصر احمد بٹ کو گاڑی تلے کچل کر شہید کرنے کی کارروائی اسرئیلی طرز کی جارحیت ہے
اسلام آباد÷÷÷÷÷جماعت اسلامی مقبوضہ جموں و کشمیر کے رہنما مولانا غلام نبی نوشہری نے پاکستان کی سیاسی قیادت پر زور دیا ہے کہ عام انتخابات کے موقع پر انتخابی منشوروں اور سرگرمیوں میں کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے لیے جدوجہد کے عزم کا اعادہ کیا جائے ۔ انتخابی منشوروں میں مسئلہ کشمیر کو سرفہرست رکھا جائے ۔بھارت کے ساتھ تمام تعلقات اور اعتماد سازی کے اقدامات کو مسئلہ کشمیر میں پیش رفت سے مشروط کیا جائے۔ راولپنڈی میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مولانا غلام نبی نوشہری نے سری نگر میں بھارتی فوج کے ہاتھوں21سالہ نوجوان قیصر احمد بٹ کو گاڑی تلے کچل کر شہید کرنے کی کارروائی کو اسرئیلی طرز کی جارحیت قرار دیا ہے ۔مولانا غلام نبی نوشہری نے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل سے اپیل کی ہے کہ جموں و کشمیر میں بھارتی فوج کے ہاتھوں نہتے شہریوں کی نسل کشی کا فوری نوٹس لیا جائے اور صورت حال کے جائزے کے لیے خصوصی نمائندہ بھیجا جائے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی فوج نے کشمیر ی کو خوفزدہ کرکے انہیں مطالبہ آزادی سے دستبردار کرانے کا منصوبہ بنایا ہے تاہم حقیقت یہ ہے کہ ظلم و ستم سے نہ کبھی کوئی قوم دبی ہے اور نہ ہی کسی قوم نے اپنے حقوق سے دستبرداری کا اعلان کیا ہے بلکہ ظلم کرتے کرتے ظالم ہی انجام بد کا شکار ہوگئے ہیں۔ ۔ مولانا نے اسلامی مملک کی تنظیم او آئی سی پر زور دیا ہے کہ کشمیر کی گھمبیر صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے بھارتی فوج کے ہاتھوں انسانی حقوق کی دھجیاں اُڑانے کی کارروائیوں کو رکوانے کی خاطر مؤثر اقدامات کریں۔ انہوں نے بتایا کہ کشمیر یوں کے خلاف بھارتی فوج جدید ہتھیاروں اور ظالما نہ قانون آرمڈ فورسز سپیشل پاور ایکٹ سے لیس کیا گیا ہے۔ کشمیریوں کے قتل پر فوجی اہلکاروں کی باز پرس نہیں ہوتی۔ انہوں نے کہا مسئلہ کشمیر کا حل منصفانہ اور آزادانہ رائے شماری ہی ہے ۔ کشمیر کے مسئلے کا صرف یہی حل کشمیری عوام کی امنگوں اور پاکستانی قوم کے احساسات کی ترجمانی ہے۔ چونکہ اس مبنی برحق و صداقت کے موقف سے ہٹ کر مسئلے کے حل کا کوئی بھی فارمولا پاکستانی قوم میں انتشار اور تحریک آزادی کی حوصلہ شکنی کا باعث ہوگا۔ مولانا نے حکومت پاکستان سے اپیل کی ہے کہ کشمیر میں انسانی حقوق کی صورت ھال سے عالمی برادری کو آگاہ کیا جائے ۔ اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیریوں کو حق خودارادیت دلانے کے لیے اقدامات کیے جائیں ۔