Buy website traffic cheap

شہباز شریف

شہبازشریف کا تنقیدی بیان، پی ٹی آئی اور پی پی پی حواس باختہ

شہبازشریف کا تنقیدی بیان، پی ٹی آئی اور پی پی پی حواس باختہ….شہبا زشریف کا کہنا تھا کہ ووٹ کی طاقت سے آصف زرداری اور عمران خان کی سیاست دفن کر دیں گے، نیازی نے لوٹوں کوٹکٹ دے کر اپنا نیا پاکستان دکھا دیا ہے مجھے تحریک انصاف کے ان سیاسی کارکنوں سے دلی ہمدردی ہے جنہیں نئے پاکستان کے نام پر دھوکا دیا گیا ہے۔

————————-

یہ خبر بھی پڑھیئے

تمام بڑے شہروں کے لیے ارب ٹرانسپورٹ ماسٹر پلان بنانے کا فیصلہ
واٹرویزسے سامان کی نقل و حرکت،بڑے شہروں میں پارکنگ مسائل حل کرنے کیلیے بھی پالیسی بنائی جائے گی،دستاویز
اسلام آباد(یوا ین پی) وفاقی حکومت کی جانب سے نیشنل ٹرانسپورٹ پالیسی کے تحت تمام بڑے شہروں کے لیے اربن ٹرانسپورٹ ماسٹر پلان بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔میڈیاکو موصول دستاویز کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے نیشنل ٹرانسپورٹ پالیسی کے تحت روڈ ٹرانسپورٹ، ریل ٹرانسپورٹ اور اربن ٹرانسپورٹ سمیت ٹرانسپورٹ کے تمام ذرائع کو بہتر کرنے کے سلسلے میں مختلف اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، اس ٹرانسپورٹ پالیسی کے تحت وفاقی حکومت کی جانب سے نیشنل ٹرانسپورٹ پالیسی کے تحت اربن ٹرانسپورٹ کو فروغ دیتے ہوئے تمام بڑے شہروں کے لیے اربن ٹرانسپورٹ ماسٹر پلان بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ٹرانسپورٹ پالیسی کے تحت ملک کے بڑے شہروں میں موٹرائزڈ ٹرانسپورٹ کی حوصلہ شکنی کر تے ہوئے پیدل چلنے اور سائیکلنگ کو فروغ دینے کی تجویز بھی ہے۔دستاویز کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے شہروں میں پیدل چلنے، سائیکلنگ نیٹ ورکس اور دیگر سہولتوں کو ڈیولپ کیا جائے گا اور پرائیویٹ موٹرائزڈ ٹرانسپورٹ کو جہاں تک ہو سکے کمی لائی جائے گی، اس وقت ملک کے تمام بڑے شہروں میں پارکنگ کے مسائل درپیش ہیں جس کی ایک بڑی وجہ نئے بننے والے پلازوں میں پارکنگ کی جگہ نہ چھوڑنا اور پارکنگ کے لیے کوئی موثر حکمت عملی تاحال نہ ہونا ہے۔اس سلسلے میں بھی حکومت نے اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے اور نیشنل ٹرانسپورٹ پالیسی کے تحت حکومت کی جانب سے پارکنگ پالیسی بنائی جا ئے گی جس کے ذریعے ملک میں درپیش پارکنگ مسائل کو حل کرنے کے لیے کام کیا جائے گا، اس کے علا وہ جہاں پر ممکن ہو سکے گا۔شہروں کے اندر جہاں واٹر وے ٹرانسپورٹ سسٹم کو بھی سامان کی نقل و حرکت اور سفرکیلیے استعمال کیاجائے گا اور اربن ٹرانسپورٹ اتھارٹیز بھی قائم کی جائیں گی جومقامی ٹرانسپورٹ سروسز کی منصوبہ سازی اور ریگولیٹ کریں گی۔اربن ٹرانسپورٹ اتھارٹیز کی جانب سے اربن پبلک ٹرانسپورٹ کو لائسنس بھی دیا جائے گا، موثر اور مستحکم ٹرانسپورٹ کے نظام کو فروغ دینے کیلیے ضابطہ کار کا تعین کیا جائے گا، فضا میں کاربن کی کمی کیلیے الیکٹرک اور دیگر کم کاربن والی ٹرانسپورٹ کو فروغ دیا جائے گا، اربن ٹرانسپورٹ کی سیفٹی اور سیکیورٹی بھی بڑھائی جا ئے گی۔
پی) معروف چینی اخبار ’’ گلوبل ٹائمز ‘‘ نے کہا ہے کہ پاکستان اپنے منفرد جغرافیائی صورتحال اور صلاحیتوں سے چین کو یورپ سے رابطوں کیلیے انٹر چینج اسٹیشن بن جائے گا۔ہفتہ کو گلوبل ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق یورپین یونین نے عرصہ دراز سے خطے پر نظریں جمائی ہیں، اگر چین اور یورپین یونین پاکستان میں قریبی تعاون کیلیے کام کریں تو یہ علاقائی سیاسی استحکام کے فروغ اور اقتصادی ترقی کیلئے انتہائی اہمیت کی حامل ہوگی۔رپورٹ کے مطابق شاہراہ ریشم کو اقتصادی بیلٹ تصور کیا جاتا ہے اور کئی راستوں کے ذریعے چین کو یورپ سے منسلک کرتا ہے، بیلٹ اینڈ روڈ اقدام کو آگے بڑھانے کیلئے شاہراہ ریشم کیساتھ لاجسٹک مرکز قائم کرنے کا منصوبہ ہے جبکہ پاکستان ان راستوں میں سے اہم پوائنٹ ہے، اس لحاظ سے پاکستان، چین کو یورپ سے منسلک کرنے کا انٹر چینج اسٹیشن بن سکتا ہے۔یورپین یونین مشرق وسطیٰ بالخصوص اسلامی ممالک میں اسٹریٹجک پارٹنرز کو خصوصی توجہ دے رہا ہے۔ پاکستان کے مشرق وسطیٰ اور سابق سویت ریاستوں سے ربط کے باعث پاکستان سرمایہ کاری کیلیے پر کشش ملک بنتا جارہا ہے۔