Buy website traffic cheap

کاغذات

عام انتخابات کا شیڈول منظر عام پر آگیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) الیکشن کمیشن نے عام انتخابات 2018کے شیڈول کا اعلان کر دیا ، ، ملک میں عام انتخابات 25جولائی کو ہوں گے ، 2سے6جون تک کاغذات نامزدگی جمع کرائے جائیں گے،کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال 14جون تک کی جائے گی،امیدواروں کی حتمی فہرست 27جون کو شائع کی جائے گی، 29جون کو امیدواروں کو انتخابی نشان الاٹ کئے جائیں گے، سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب فتح محمد نے کہا ہے کہ یہ شیڈول آئین اور قانون کے مطابق ہے،ہمیں شیڈول دینے سے نہ روکا گیا ہے اور نہ کوئی رخنہ ڈالا گیا ہے، نگران حکومت کے ساتھ سیکیورٹی کے مسائل کو زیر بحث لایا جائے گا ، انتخابات کے لئے ضابطہ اخلاق ایک دو دن تک جاری کردیا جائے گا۔جمعرات کو الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب فتح محمد نے کہا کہ آج انتخابات کے حوالے سے اہم سنگ میل ہے ،الیکشن کمیشن نے آج شیڈول جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے ،صدر مملکت نے انتخابات کے لئے 25جولائی کی تاریخ مقرر کر رکھی تھی قانون کے مطابق جب الیکشن کی تاریخ کا اعلان ہو جائے تو7دن کے اندر اندر شیڈول جاری کیا جاتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ (آج ) یکم جون کو پبلک نوٹس جاری کیا جائے گا جبکہ 2سے6جون تک کاغذات نامزدگی جمع کرائے جائیں گے ، امیدواروں کے ناموں کی فہرست 7جون کو شائع کی جائے گی ، کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال 14جون تک کی جائے گی ، امیدوار ریٹرنگ افسران کے فیصلوں کے خلاف 19جون تک اپیلیں دائر کر سکیں گے جبکہ ایپلٹ ٹربیونل کے فیصلوں کے خلاف اپیلیں 26جون تک نمٹائی جائیں گی ،امیدواروں کی حتمی فہرست 27جون کو شائع کی جائے گی جبکہ 28جولائی تک امیدوار اپنے نام واپس لے سکتے ہیں جبکہ 29جون کو امیدواروں کو انتخابی نشان الاٹ کئے جائیں گے ۔ بعد ازاں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے سیکرٹری الیکشن کمیشن نے کہا کہ یہ شیڈول آئین اور قانون کے مطابق ہے ،آج ہونے والے اجلاس میں بھی اہم تجاویز سامنے آئی ہیں ، الیکشن کمیشن نے تمام تجاویز کو سنا ہے ، ہم نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن مبصرین کی حوصلہ افزائی کرتا ہے ، بین الاقوامی میڈیا بھی آئے اور ہمارا الیکشن دیکھے یہ کوئی چھپانے والی بات نہیں ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے عہدیداروں کے لئے بھی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر دو دو سال کی سزا کی تجویز دی گئی ہے ۔ پولنگ ایجٹس اور میڈیا کےلئے بھی ضابطہ اخلاق بنایا گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نگران حکومت کے ساتھ سیکیورٹی کے مسائل کو زیر بحث لایا جائے گا ، آج ہونے والے اجلاس میں ہر سیاسی جماعت نے کہا ہے کہ شیڈول جاری کریں ۔ بابر یعقوب نے کہا کہ اعلیٰ عدالتوں میں رٹ دائر کرنے کا دائرہ اختیار موجود ہے ، ہمیں شیڈول دینے سے نہ روکا گیا ہے اور نہ کوئی رخنہ ڈالا گیا ہے ، ضابطہ اخلاق ایک دو دن تک جاری کردیا جائے گا ۔ عام انتخابات کیلئے 21کروڑ سے زائد بیلٹ پیپرز چھاپے جائیں گے۔بیلٹ پیپرزکیلئے فرانس اور برطانیہ سے پیپرامپورٹ کیا گیا ہے الیکشن کمیشن نے آئندہ عام انتخابات کی نگرانی کرنے والے مبصرین کے لیے 14 نکاتی ضابطہ اخلاق جاری کردیا جس میں کہا گیا ہے کہ اجازت نامے کے بغیر مبصرین کو انتخابی عمل کے مشاہدے کی اجازت نہیں ہوگی،مبصرین کو پاکستان کی سالمیت کے ساتھ عوام کے بنیادی حقوق کا خیال رکھنا ہوگا ،مبصرین میڈیا پر انتخابی عمل سے متعلق ذاتی رائے کا اظہار نہیں کرسکیں گے۔ تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن نے آئندہ عام انتخابات کی نگرانی کرنے والے مبصرین کے لیے 14 نکاتی ضابطہ اخلاق جاری کردیا ہے جس کے مطابق مبصرین کو اجازت نامے کے بغیر انتخابی عمل کے مشاہدے کی اجازت نہیں ہوگی اور اجازت نامے کو نمایاں طور پر آویزاں کرنا ہوگا۔ضابطہ اخلاق میں کہا گیا ہے کہ مبصرین کو پاکستان کی سالمیت کے ساتھ عوام کے بنیادی حقوق کا خیال رکھنا ہوگا اور مبصرین انتخابی اہلکاروں کے اختیارات کا احترام کریں گے۔ضابطہ اخلاق کے مطابق مبصرین الیکشن کمیشن کی ہدایات پر عمل کرنے کے پابند ہوں گے اور ان کے مشاہدات مکمل غیر سیاسی، غیر جانبدار اور معروضی ہونے چاہیے۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری ضابطہ اخلاق میں مزید کہا گیا ہے کہ مبصرین میڈیا پر انتخابی عمل سے متعلق ذاتی رائے کا اظہار نہیں کرسکیں گے۔یاد رہے کہ ملک میں آئندہ عام انتخابات 25 جولائی کو ہوں گے۔