Buy website traffic cheap

سپریم کورٹ

متحدہ عرب امارات میں پاکستانیوں کی جائیدادوں کی کتنے ارب ڈالر مالیت ہے، سپریم کورٹ میں ہوشربا رپورٹ جمع

لاہور(ویب ڈیسک): پاکستانیوں کی یواے ای میں 150 ارب ڈالرزکی جائیدادیں اوربینک اکاؤنٹس ہیں، ایف بی آر کی جانب سے دئیے گئے نوٹس کی تفصیلات سپریم کورٹ میں پیش کر دی گئیں۔ تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی نے پاکستانیوں کے بیرون ملک اکاﺅنٹس سے متعلق کیس کی سماعت کی،ایف بی آر کی جانب سے دئیے گئے نوٹس کی تفصیلات سپریم کورٹ میں پیش کردی گئیں،رپورٹس سٹیٹ بینک ، اے جی فرگوسن نے جمع کروادیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایف بی آر نے 100 افراد کو نوٹسز جاری کررکھے ہیں،پاکستانیوں کی یواے ای میں 150 ارب ڈالرزکی جائیدادیں اور بینک اکاؤنٹس ہیں۔ گورنر سٹیٹ بینک شبر رضوی نے کہا کہ ہمیں یو اے ای حکومت کی معلومات پراحتیاط برتنی ہوگی،125 افراد کونوٹسزجاری کردیئے ہیں،مذکورہ افراد یو اے ای میں جائیداد کے حامل ہیں،گورنر سٹیٹ بینک نے کہا کہ اگران لوگوں نے جائیدادوں کا بیان حلفی دیا تو ٹیکس لیا جائے گا، ایف آئی اے اور نیب بھی اس پر کام کر رہے ہیں۔چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ایمنسٹی سکیم کے باوجود اتنی رقم باہر پڑی ہے؟،شبر رضوی نے کہا کہ زرعی آمدن ظاہر کرکے پیسہ باہر لے جایا جاتا ہے۔ جسٹس عطاعمر بندیال نے استفسار کیا کہ کیا فارن کرنسی ملک سے باہرلے جانے پرپابندی ہے؟،گورنر سٹیٹ بینک نے کہا کہ 10 ہزارڈالرباہر لے جائے جاسکتے ہیں۔عدالت نے کہا کہ بیرون ملک جائیدادیں رکھنے والے 100 افراد کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے،نام ظاہر ہوئے تورجسٹرار اورایف بی آرذمہ دار ہوں گے،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ کسی کی پگڑی اچھالنا نہیں چاہتے۔ عدالت نے وزیراعظم کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس کی سفارشات تک کارروائی ملتوی کردی، سپریم کورٹ مزید سماعت 5 ستمبر کو کرے گی۔