Buy website traffic cheap

کشمیر

مسئلہ کشمیر حل نہ ہونااقوام متحدہ کی ساکھ پرسوالیہ نشان ہے

اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے کہا ہے کہ کشمیرپرسلامتی کونسل کی قراردادوں پرعمل نہ ہونااقوام متحدہ کی ساکھ پرسوالیہ نشان ہے‘ یواین چارٹر کے تحت عالمی امن‘ سیکیورٹی یقینی بنائی جائے‘دنیا میں کشیدگی اور فساد بڑھنے سے عالمی سیکیورٹی صورتحال مزید غیر یقینی ہوگئی ہے۔ افسوس ہے مقبوضہ کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کی قراردادوں پر ابھی تک عمل نہ ہوسکاجبکہ مسئلہ کشمیر سلامتی کونسل کے ایجنڈے میں سب سے پرانا ہے۔ دنیا میں کشیدگی اور فساد بڑھنے سے عالمی سیکیورٹی صورتحال مزید غیر یقینی ہوگئی ہے، اقوام متحدہ کے چارٹر کے تحت عالمی امن یقینی بنایا جانا بہت ضروری ہے ،موجودہ حکومت کو خطے میں دیرپا امن کے مقاصد کے حصول میں ناکام نہیں ہونا چاہیے۔
بانی پاکستان نے کشمیر کو پاکستان کی شہ رگ سے تعبیر کیا تھا اورکس قدر افسوس اور صدمے کی بات ہے کہ گزشتہ 70 برسوں سے ہماری یہ شہ رگ ہمارے دشمن کے قبضے میں چلی آرہی ہے۔ کیا عالمی ادارے، اقوام عالم، اقوام متحدہ یا اس قماش کے تمام اداروں پر ”مسئلہ کشمیر“ ایک سوالیہ نشان کے ساتھ بین الاقوامی منظرنامے پر موجود ہے۔ اور اب کشمیر کی آزادی کے بڑے بڑے رہنما اسے انسانی حقوق کا قبرستان کہنے پر مجبور ہیں۔ کہاں جنت نظیر کشمیر کے لیے یہ لقب اور کہاں اس کشمیر کو انسانی حقوق کا قبرستان سمجھ لینا بے بس اور بے کسی کی انتہا نہیں تو اور پھر کیا ہے؟