Buy website traffic cheap


مصر کے نیل ڈیلٹا میں دنیا کا قدیم ترین گاؤں دریافت

لاہور(ویب ڈیسک): مصر کے ایک صحرائی علاقے نیل ڈیلٹا میں پتھر کے دور کے ایک گاؤں کا پتا چلا ہے۔عرب خبررساں ادارے کے مطابق اس گاؤں کا انکشاف مصر اور فرانس کی آثارقدیمہ کی ٹیموں کی جانب سے مشترکہ تحقیقاتی مشن، طویل ارضیاتی سروے اور کھدائیوں کے دوران کیا گیا۔مصری وزارت آثار قدیمہ کا کہنا ہے کہ الدقھلیہ گورنری کے علاقے تل السمارہ میں کھدائیوں کے دوران پتھر کے دور کے گاں کا انکشاف فریڈرک گیو کی قیادت میں کام کرنے والی ماہرین آثارقدیمہ کی ٹیم نے کیا۔پتھر کے دور کے گاؤں سے جانوروں کی ہڈیاں، نباتات کی باقیات، صوامع، پتھر کے برتن، آلات اور دیگر اشیا ملی ہیں۔ یہ گاؤں ایک ہزار پانچ قبل مسیح کا ہوسکتا ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ تل السمار میں ایک پرانے گاں کی موجودگی کے شواہد 2015 میں ملے تھیجس کے بعد سائنسدان اس کے بعض دوسرے پہلوں پر تحقیق کرتے رہے۔ ماہرین یہ جانچنے کی کوشش کررہے تھے کہ کیا یہ گاں مصر کی ابتدائی تاریخ کا حصہ اور اس دور کا ہے جب مینا بادشادہ نے دونوں حصوں کو ایک دوسرے سے ملایا تھا۔الدقھلیہ گورنر کا شمار مصر کے قدیم ترین علاقوں میں ہوتا ہے۔ اس علاقے میں یونانی، رومن اور ممالیک کے دور کی باقیات آج بھی موجود ہیں۔