Buy website traffic cheap

پٹرول

موبائل بیلنس کے بعد چیف جسٹس نے پٹرولیم مصنوعات پر لگائے گئے ٹیکس کا نوٹس لے لیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے پٹرولیم مصنوعات پر لگائے گئے ٹیکسز سے متلعق کیس کی سماعت کی. جس میں چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ لوگوں کو پٹرولیم مصنوعات پر ٹیکس لگا لگا کر پاگل کردیا ہے. ڈپٹی ایم ڈی پاکستان اسٹیٹ آئل یعقوب ستار نے عدالت کو بتایا کہ مختلف ادارے پی ایس او کے 300 ارب روپے کے نادہندہ ہیں۔ جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ آپ ان اداروں سے 300 ارب روپے واپس کیوں نہیں لے رہے؟ اس کا مطلب ہے آپ بینکوں سے قرض لے کر معاملات چلا رہے ہیں۔