Buy website traffic cheap

پلان

نیا بلدیاتی نظام لانے کی تیاری مکمل،مقامی حکومتیں کتنی خودمختاری ہونگی ؟؟

اسلام آباد:وفاقی حکومت نے نئے بلدیاتی نظام کی تیاری مکمل کرلی ،پاکستان تحریک انصاف حکومت نے مقامی حکومتوں کے نیا نظام لانے کا فیصلہ کر لیا ہے ۔وفاق نے نئے مقامی حکومتوں کے نظام کا ڈرافٹ بنا لیا ہے جس میں مرحلے میں وفاق، پنجاب اور خیبر پختونخواہ کے اضلاع میں انتظامی سربراہ مئیر جب کہ تحصیل کا سربراہ ڈپٹی میئر ہوگا جن کا انتخاب براہ راست کرنے کی تجویز ہے۔نئے نظام کے تحت پولیس اور ضلعی انتظامیہ میئر کے ماتحت ہوگی اور ضلع کے مالی اختیارات بھی میئر کے پاس ہوں گے، ضلع کے پولیس اور انتظامی سربراہ کی کارکردگی رپورٹ لکھنے کا اختیار مئیر کو ہوگا۔مقامی حکومتوں کے نئے مجوزہ نظام کے تحت پولیس، عدالتی محکموں، صحت و تعلیم کے شعبوں کے اختیارات بھی ضلعی حکومتوں کے پاس ہوں گے۔صوبائی وزیراعلیٰ اور وزراء نئے مقامی حکومتوں کے نظام میں مداخلت نہیں کرسکیں گے اور ضلعی حکومتیں مالی طور پر خودمختار ہوں گی۔ وزیراعظم عمران خان کی سربراہی میں مقامی حکومتوں کے نئے نظام پر اعلی سطح مشاورتی اجلاس آج لاہور میں طلب کیا گیا ہے اور مشاورت کے بعد نئی اصلاحات کی منظوری دیے جانے کا امکان ہے۔ سندھ اور بلوچستان کے لیے نئے مقامی حکومتوں کے نظام پر مشاورت ابھی نہیں کی گئی، نیا نظام قومی و صوبائی اسمبلیوں سے منظور کرائے جانے کی تجویز تو ہے مگر صدارتی آرڈیننس کا آپشن بھی زیرغور ہے۔