Buy website traffic cheap

بنگالیوں

وزیراعظم کی افغانیوں اور بنگالیوں کو شہریت دینے پر نیا پنڈورا باکس کھل گیا

لاہور (تجزیہ نگار) وزویر اعظم عمران خان نے کراچی میں افغان اور بنگالی شہریوں کو شناختی کارڈ اور پاسپورٹ بناکردینے کا جو اعلان کیاہے اس پر سیاسی اور سماجی حلقوں سے ملاجلاردعمل آیاہے ۔تجزیہ نگار خوشنودعلی خان نے کہاہے کہ ایک غلطی ضیا ءالحق نے کی جب انہوںنے افغان پناہ گزینوں کی بستیاں قائم کیں یہی پناہ گزین آج پاکستان کے شہری بنکرہماری جان کو آئے ہیں ۔جس میں سے دہشت گردبھی پیداہورہے ہیں اور اب اگر سندھ میں رہنے والے بنگالیوں ،برمی مسلمانوں اور خاص طور پر افغانیوں کو پاسپورٹ اور شناختی کارں بناکردیئے گئے تو اس کے دونقصانات ہوںگے ۔ایک توفوری طورپرباہرسے مزید افغان آکر کراچی آباد ہوجائیں گے اور دوسرا ان کی آبادی جب زیادہ ہوگئی تو کل و ہ اپنا افغان وزیر اعلیٰ یا افغان گورنر لانے کامطالبہ کریں گے اور پھراس بات کاکیسے پتہ چلے گا کہ جن کو پاسپورٹ یاشناختی کارڈ بناکردیئے جارہے ہیں وہ واقعی کراچی میں پیدا ہوئے تے یا باہرسے آکر آباد ہوئے تھے ۔لہٰذاحکومت کو اس سلسلے میں جلد بازی نہیں کرنی چاہئے۔خوشنودعلی خان نے کہاکہ ہم افغان ،برمی اور بنگلہ دیشی بچوں سے تو ہمدردی جتارہے ہیں مگرتھرمیں جو پاکستانی بچے بھوک سے مررہے ہیں ان کاخیال کون کرے گا۔یادرہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے گذشتہ روز کہاتھا کہ یہ بیچارے جو بنگلہ دیش سے لوگ 40سال سے یہاں آئے ہوئے ہیں ان کے بچے بھی بڑے ہوگئے ہیں نہ صرف ان کوپاسپورٹ دلوائیںگے بلکہ وہ افغان جن کے بچے بڑے ہوگئے ہیں جوپاکستان میں پیداہوئے ان کو بھی شناخی کارڈ اور پاسپورت دلوائیںگے۔