Buy website traffic cheap


وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا،تمہیں‌یاد ہو کہ نہ یاد ہو

وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا،تمہیں‌یاد ہو کہ نہ یاد ہو…………آصف علی زرداری حامد سعید کاظمی کو اپنے من پسند حلقہ سے لڑانے کے لئے راضی نہ کر سکے اور واپس چلے گئے۔ایک گھنٹہ ملاقات میں سابق صدر آصف علی زرداری سابق وفاقی وزیر حامد سعید کاظمی کو منانے میں ناکام رہے جس کے بعد حامد سعید کاظمی نے حلقہ این اے 175 سے آزاد الیکشن لڑنے کا فیصلہ کر لیا۔

———————————–
یہ خبر بھی پڑھیئے

مقبوضہ کشمیر میںیوم قدس اور یوم کشمیر منایا گیامقبوضہ کشمیر بھر میں خصوصی اجتماعات
فلسطینیوں اور کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جائے عوام پر ہو رہے مظالم بند کیے جائیں
کشمیر اور فلسطین کے مسائل حل کرنے کیلئے اقوام متحدہ اور عالمی برادری اپنا کردار ادا کرے
مساجد ، خانقاہوں، امام باڑوں اور آستانوں میں خصوصی اجتماعات میں خصوصی قرارداد منظور
سری نگر÷÷÷÷÷مقبوضہ کشمیر میں جمعہ کویوم قدس اور یوم کشمیر منایا گیاپورے جموں وکشمیر کی مرکزی مساجد ، خانقاہوں، امام باڑوں اور آستانوں میں خصوصی اجتماعات میں، شہدا کے ایصال ثواب، کشمیر اور فلسطین کی آزادی کے لیے دعائیں کی گئیں ۔ کئی مقامات پر بھارت کے خلاف احتجاجی مظاہرے بھی کیے گئے ۔مقبوضہ کشمیر کی مشترکہ مزاحمتی قیادت سید علی شاہ گیلانی، میرواعظ محمد عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کی اپیل پر جمعتہ الوداع کے موقع پر یوم قدس اور یوم کشمیر منایا گیا ۔پورے جموں وکشمیر کی مرکزی مساجد ، خانقاہوں، امام باڑوں اور آستانوں میں عوامی اجتماعات کے دوراں خصوصی قرارداد منظور کی گئی جس میں فلسطین ، اور کشمیری عوام پر ہو رہے مظالم اور ان دونوں دیرینہ تنازعوں کے حل کے تئیں عالمی برادری کی عدم توجہی کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے مطالبہ کیا گیا ہے کہ ان دونوں مسئلوں کو ان کے تاریخی تناظر میں حل کرنے کیلئے اقوام متحدہ اور عالمی برادری اپنا کردار ادا کرے۔مشترکہ مزاحمتی قیادت سید علی شاہ گیلانی، میرواعظ محمد عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے اس قرارداد کا مسودہ تیار کیا تھا۔قرارداد میں فلسطین ، اور کشمیری عوام پر ہو رہے مظالم اور ان دونوں دیرینہ تنازعوں کے حل کے تئیں عالمی برادری کی عدم توجہی کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے مطالبہ کیا گیا ہے کہ ان دونوں مسئلوں کو ان کے تاریخی تناظر میں حل کرنے کیلئے اقوام متحدہ اور عالمی برادری اپنا کردار ادا کرے۔ ۔قرارداد میں قبلہ اول مسجد اقصی پر اسرائیل کے غاصبانہ قبضے کی پر زور الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے دنیا کے بااثر مسلم ممالک کے ساتھ ساتھ او آئی سی پر زور دیا گیاہے کہ وہ قبلہ اول کی بازیابی اور فلسطینی عوام پر ہو رہے مظالم کو بند کرانے کیلئے آگے آئیں۔۔قرارداد میں کہا گیا ہے کہ بین الاقوامی برادری اب یہ حقیقت تسلیم کرچکی ہے کہ بھارت اور پاکستان کے درمیان تعلقات تب تک بہتر نہیں ہو سکتے اور نہ اس خطے میں امن و استحکام قائم ہو سکتا ہے جب تک مسئلہ کشمیر کو کشمیری عوام کی مرضی اور خواہشات کے مطابق حق خودارادیت کی بنیاد پر حل نہیں کیا جاتا اس لئے یہ عظیم الشان اجتماع مطالبہ کرتا ہے کہ بھارت اور پاکستان کی سیاسی قیادت مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے خلوص، سنجیدگی اور سیاسی جراتمندی کا مظاہرہ کرتے ہوئے بامعنی اقدامات کا آغاز کرے۔مقبوضہ کشمیرکشمیر میں سرکاری سطح پر مار دھاڑ ، گرفتاریوں، ہراسانیوں، اور مزاحمتی قیادت کی پر امن سرگرمیوں پر آئے روز کی قدغنوں ، بندشوں، تھانہ اور خانہ نظر بندیوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے واضح کیا گیا ہے کہ کشمیر میں مار دھاڑ، قتل و غارت ، بلا جواز پکڑ دھکڑ اور گرفتاریوں کا سلسلہ بند کیا جانا چاہئے۔ حالیہ ایام میں شہید ہوئے کشمیری نوجوانوں اور جملہ شہدائے کشمیر کو ان کی عظیم شہادت پر بھر پور الفاظ میں خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے اس بات کا اعلان کیا گیا ہے کہ شہیدوں کے مقدس مشن کی آبیاری اور اس کو منطقی انجام تک لیجانا مزاحمتی قیادت ر حریت پسند عوام کی اولین ذمہ داری ہے اور اس مشن کو کامیابی کے مرحلے تک لیجانے کیلئے کوئی بھی دقیقہ فروگزاشت نہیں کیاجائیگا۔جموں وکشمیر اور بھارت کی مختلف ریاستوں کی جیلوں میں سالہا سال سے بند کشمیری سیاسی قیدیوں کے ساتھ روا رکھے جارہے غیر انسانی سلوک اور ان کی مدت قید کوبلا وجہ طول دینے کے حربوں اور تحقیق اور تفتیش کے نام پر مزاحمتی کارکنوں کو جھوٹے اور بے بنیاد کیسوں میں پھنسانے کی کوششوں کی پر زور مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کرتا ہے کہ سالہا سال سے بند سیاسی قیدیوں کو غیر مشروط طور رہا کیا جائے۔ کشمیر میں جاری حقوق انسانی کی سنگین خلاف ورزیوں ، طاقت اور تشدد کے بل پر نوجوان نسل کو پشت بہ دیوار کرنے کے منصوبوں اور کشمیری حریت پسند عوام کیخلاف سرکاری سطح پر جاری جارحانہ کارروائیوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے حقوق بشر کے عالمی اداروں پر زور دیتا ہے کہ وہ کشمیری عوام کیخلاف ہو رہی زیادتیوں کا سنجیدہ نوٹس لے۔