Buy website traffic cheap

خیبر پختونخوا

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کا سپریم کورٹ میں خواجہ سراؤں کو ملازمت دینے کا اعلان

لاہور(ویب ڈیسک): سپریم کورٹ میں خواجہ سراؤں کے حقوق سے متعلق کیس میں چیف جسٹس پاکستان نے کہا ہے کہ خواجہ سراؤں کوحقوق دلاناہماری اولین ترجیح ہے،سپریم کورٹ میں 2 خواجہ سراوں کوملازمت دیں گے۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سر براہی میں بنچ نے خواجہ سراؤں کے حقوق سے متعلق کیس کی سماعت کی، چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ این جی اوزاورکے پی حکومت کونوٹس جاری کرتے ہیں،ہمارے معاشرے میں خواجہ سراوں کی تضحیک کی جاتی ہے،عدالت خواجہ سراوں کوقومی دھارے میں لاناچاہتی ہے،عدالت خواجہ سراوں کی حفاظت اوران کے مسائل کاحل چاہتی ہے۔چیف جسٹس پاکستان نے استفسار کیا کہ کیاتمام درخواست گزاروں کے شناختی کارڈجاری ہوں گے؟چیئرمین نادرا نے کہا کہ شناختی کارڈجاری کررہے ہیں،سہولت مہم بھی جاری ہے،چیف جسٹس نے کہا کہ محض کارروائیاں نہیں ہونی چاہئیں،اس طرح کے واقعات بدنامی کاسبب بنتے ہیں،خیبرپختونخوامیں خواجہ سراؤں کی تذلیل کی جاتی ہے،خیبرپختونخوامیں خواجہ سراؤں کوجان لیوادھمکیوں کاسامناہے،سیکرٹری کمیشن نے کہا کہ مجھے ایسی اطلاعات پرافسوس ہے،خواجہ سراوں کوقتل بھی کیا گیا۔چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ کون سی این جی اوہے جوپیج بناکربدنام کررہی ہے؟عدالت نے خواجہ سراوں کے حقوق سے متعلق سفارشات 2 ہفتے میں طلب کر لی اور خواجہ سراوں کیخلاف ویب سائٹس کا نوٹس لیتے ہوئے بلیووین ویب سائٹ کے مالک نسیم قمرکونوٹس جاری کر دیا،عدالت نے ریمارکس میں کہا کہ ویب سائٹ کے ذریعے غیرضروری معلومات اورافواہیں پھیلائی جارہی ہیں،عدالت نے کیس کی سماعت 2 ہفتے کیلئے ملتوی کردی۔