Buy website traffic cheap

ڈی پی او

ڈی پی او پاکپتن تبادلہ کیس میں پاکستان کی اہم ترین خفیہ ایجنسی کے سینئر آفیسر کی انٹری نے سنسنی پھیلادی، اہم انکشاف

لاہور(ویب ڈیسک): سپریم کورٹ میں ڈی پی او رضوان گوندل کے تبادلے پر از خود نوٹس کی سماعت جاری ہے جس دوران وقفہ لیا گیاہے جبکہ چیف جسٹس نے خاور مانیکا اور احسن جمیل گجر کو تین بجے سے پہلے عدالت میں پیش کرنے کا حکم جاری کر دیاہے اور رضوان گوندل نے عدالت میں واقعہ سے متعلق اپنے بیان میں حیران کن انکشافات کیے ہیں۔ سپریم کورٹ میں سماعت کے دوران رضوان گوندل نے بیان دیتے انکشاف کیا کہ انہیں خاور مانیکا کے ڈیرے پر جا کر معافی مانگنے کا کہا گیا لیکن انہوں نے بطور ڈی پی او جانے سے انکار کر دیا اور ان کو خاور مانیکا کے ڈیرے پر جانے کیلئے آئی ایس آئی کے کرنل طارق نے بھی فیصل آباد سے فون کیا تھا۔جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ ایک معمولی واقعہ میں وزیراعلی کہاں سے آ گیا؟ وزیراعلی کا یار کہاں سے آ گیا؟ آئی ایس آئی کا کرنل کہاں سے آ گیا؟۔