Buy website traffic cheap

ڈیموں

کالا باغ ڈیم کے حوالے سے چیف جسٹس ان ایکشن

کالا باغ ڈیم کے حوالے سے چیف جسٹس ان ایکشن….چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ معلوم ہے آئندہ وقتوں میں پانی کی اہمیت کیا ہو جائیے لیکن اگر چار بھائی جس نقطے پر متفق نہیں تو پھراُس کا متبادل کیا ہے؟
سابق چیئرمین واپڈا ظفر محمود عدالت میں پیش ہوئے جن سے چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ آپ بتائیں پانی کی قلت کیسے پوری کریں جس پر انہوں نے کہا کہ کالا باغ ڈیم بنانے پر لوگوں کو مکمل آگاہی نہیں اور اسی تنازع کے بعد واپڈا کی چیئرمین شپ سے استعفا دیا تھا
ثاقب نثار نے کہا کہ لاکھوں گیلن گندا پانی سمندر میں بہہ جاتا ہے جس پر ظفر محمود نے اپنا موقف پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس کا حل یہ ہے کہ صنعتی فضلے کے لیے ٹریٹمنٹ پلانٹ بنائے جائیں۔

———————–
یہ خبر بھی پڑھیئے

جنگ بندی میں توسیع کی جائے مقبوضہ کشمیر کے وزیر اعلی محبوبہ مفتی
فوجی آپریشنز کی معطلی کے نتیجے میں کشمیری نوجوان چین کی سانس لے رہے ہیں
سری نگر—– مقبوضہ کشمیر کے وزیر اعلی محبوبہ مفتی نے بھارتی وزیرداخلہ راج ناتھ سنگھ سے کہا ہے کہ جنگ بندی میں توسیع کی جائے۔ فوجی آپریشنز کی معطلی کے نتیجے میں کشمیری نوجوان چین کی سانس لے رہے ہیں، انہوں نے جنگ بندی میں توسیع کرنے کی وکالت کی۔سرینگر کے انڈور سٹیڈیم میں منعقدہ جموں وکشمیر سپورٹس کنکلیو 2018 سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلی نے کہا کہ عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشنز کی معطلی سے وادی میں ایک اچھا ماحول پیدا ہوا ہے جس میں کشمیری بچے اور نوجوان بغیر کسی ڈر و خوف کے گلی کوچوں اور میدانوں میں کھیل رہے ہیں۔رمضان فائر بندی میں توسیع کرنے کی وکالت کرتے ہوئے محبوبہ مفتی نے وزیر داخلہ سے مخاطب ہوکر کہا سب سے بڑا مسئلہ ماحول ہے، جب سے آپ نے آپریشنز کو معطل کرنے کا اعلان کیا ہے، تب سے ہمارے بچے چین کی سانس لے رہے ہیں، یہ لوگ گلی کوچوں میں کھیلتے ہیں،باہر آکر باغوں میں کھیلتے ہیں، ایک اچھا ماحول پیدا ہوگیا ہے۔ ان کا کہنا تھاآپ نے یہاں آپریشنز کو بند کرنے رکھنے کا اعلان کیا ہے، اس میں توسیع کی ضرورت ہے۔ تاکہ ہمارے بچے اچھے ماحول میں جی سکیں۔مسلم لیگ ن مظفرآباد حلقہ تین کی سینیئر رہنما نثارہ عباسی نے کہا ہے کہ ایکٹ 74 میں ترامیم آزادکشمیر حکومت کا تاریخی اقدام ثابت ہوگا،پاکستان کے کسی صوبے کے پاس ٹیکس وصولی کا اختیار نہیں مگر فاتوق حیدر نے یہ اختیار کشمیر کو دلا دیا،، ان ترامیم سے ریاست کو صوبوں سے زیادہ اختیارات مل گئے ہیں، صدرجماعت، وزیراعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے اپنا انتخابی وعدہ پورا کردکھایا، گزشتہ روز میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایکٹ 74 میں ترامیم سے ریاستی اختیار اور وقار میں اضافہ ہوگا، آزادکشمیر کو مالیاتی مسائل سے نجات ملے گی، ریاستی وسائل ریاست میں ہی خرچ ہونگے، اور ریاست شاہراہ ترقی پر عملی معنوں گامزن ہو سکے گی، یہ مسلم لیگ ن اور وزیراعظم آزادکشمیر کا ایک ناقابل فراموش اعزاز ہے کہ ن لیگ کی حکومت نے قائدکشمیر راجہ فاروق حیدر خان کی قیادت میں ریاست کے وقار اور اختیار میں اضافہ دیا اور مالیاتی خودمختاری کی طرف اہم قدم اٹھایا، ہم اس تاریخ ساز کامیابی پر قائد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان اور ان کی ٹیم کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے ن لیگ پاکستان کے قائدین کا بھی شکریہ ادا کرتی ہیں جنہوں نے اس نیک عمل میں ن لیگ آزادکشمیر کو سرخرو کیا۔کپوارہ قصبہ سے تعلق رکھنے والے نوجوان فاروق احمد ڈاگہ جو گزشتہ 7برسوں سے دلی کے تہاڑ جیل میں بند تھے ،کو عدالت نے بری کر دیا ۔فاروق احمد ڈاگہ کو 7سال قبل پولیس نے حوالہ سکینڈل کیس میں گرفتار کر کے تہاڑ جیل میں بند کیا ۔فا روق احمد ولد غلام محمد ڈاگہ 90کی دہائی میں مجاہدین کی صف میں شامل ہوئے تھے تاہم بعد میں اس کو گرفتار کیا گیا اور چند سال بعد رہا کیا گیا ۔جیل سے رہائی کے بعد فاروق احمد ڈاگہ افراد خانہ کا پیٹ پالنے کے لئے تجارت کے ساتھ مصروف ہوگیا لیکن 11جنوری2011کو وہ کسی کام سے کپوارہ سے سرینگر جارہا تھا اور نار بل کے مقام پر پولیس کی ایک خصوصی ٹیم نے انہیں گرفتار کیا جس کے بعد انہیں دلی کے تہاڑ جیل میں بند کیا گیا۔فاروق پر الزام تھا کہ وہ حوالہ سکینڈل میں ملو ث ہے ۔فاروق کی گرفتار ی اور 7برسو ں سے تہاڑ جیل میں بند ہونے کے دوران ان کے اہل خانہ کسمپرسی کی زندگی گزار رہے تھے جبکہ معمر والدین 7برسو ں کے دوران ان کی رہائی کے انتظار میں لا غر ہوگئے ۔دو روز قبل فاروق احمد ڈاگہ اور ان کے دو ساتھیو ں محمد صدیق گنائی اور غلام جیلانی ساکنا ن سوپورکو پٹیالہ کورٹ ہاؤ س دلی نے بری کر دیا اور اس کے رہائی کے احکامات صادر کئے ۔فاروق احمد ڈاگہ جمعرات کو سرینگر پہنچ گئے جہا ں انہو ں نے مزار شہد ا پر حاضری دی اور انہیں خراج عقیدت پیش کیا ۔