Buy website traffic cheap

sea ​​storm; Villages near the coast are empty, evacuation of thousands of people continues

سمندری طوفان؛ ساحل کے قریبی دیہات خالی، ہزاروں افراد کا انخلا جاری

کراچی: سمندری طوفان بائپر جوائے کے کیٹی بندر سے ٹکرانے کے امکانات کے پیش نظر ساحل کے قریبی دیہات خالی کروانے کا سلسلہ اور ہزاروں افراد کا انخلا جاری ہے۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سمندری طوفان کے پیش نظر سجاول کی ساحلی پٹی کا دورہ کیا۔ اس موقع پر وزیربلدیات ناصر شاہ، چیف سیکرٹری سہیل راجپوت ، ڈی جی پی ڈی ایم اے سلمان شاہ بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ وزیراعلیٰ نے سجاول، ٹھٹھہ اور بدین کی ساحلی پٹی کا فضائی معائنہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ سمندری طوفان بائپر جوائے 13 سے 17 جون کے درمیان ساحلی پٹی کے شہروں اور قصبوں سے ٹکرانے کا خدشہ ہے جس کے باعث ٹھٹھہ، بدین، سجاول، عمرکوٹ، تھرپارکر اور کراچی ، میں شدید بارشیں ہوسکتی ہیں۔پاکستان میٹ آفس کی وارننگ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بحیرہ عرب میں انتہائی شدید سمندری طوفان بائپر جوائے مزید شدت اختیار کر کے ایک سائیکلون میں تبدیل ہو گیا ہے، جو گزشتہ 12 گھنٹوں کے دوران شمال کی طرف بڑھ رہا ہے۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ تیز رفتار ہوائیں ڈھیلے اور کمزور ڈھانچے (کچے گھروں) کو نقصان پہنچا سکتی ہیں۔ٹھٹھہ، سجاول اور بدین کو خطرات ہیں، اس لیے انہوں نے کمشنر حیدرآباد کو بھیجا ہے کہ اگر ضرورت ہو تو لوگوں کو نکالیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ کمشنر کراچی کو بل بورڈز کو محفوظ بنانے کی بھی ہدایت کی ہے۔