Buy website traffic cheap


عائشہ عمر، وفاقی وزیرتعلیم پرتنقید کرنے والے طلبا پربرس پڑیں

کراچی :اداکارہ عائشہ عمرنے کیمرج امتحانات کے معاملے پرطلبا کی جانب سے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کیخلاف نامناسب زبان کے استعمال پر آواز اٹھائی ہے ۔

پاکستان میں کرونا کی تیسری اور تشویشناک لہرکے باعث چند ہفتوں سے سوشل میڈیا پر کیمرج امتحانات منسوخ کروانے کیلئے مہم چلائی جارہی تھی، اس حوالے سے آواز اٹھانے والوں میں وقار ذکا اور سماجی رہنما جبران ناصر کے علاوہ گلوکار عاصم اظہر سمیت کئی معروف سیلبرٹیزبھی شامل رہیں۔وفاقی وزیرتعلیم نے کہا کہ جس قسم کی زبان طلبا استعمال کررہے ہیں یہ ہماری حکومت، والدین اوراساتذہ کی اجتماعی ناکامی ہے۔

16، 17 سال کے بچے جو زبان استعمال کررہے ہیں،وہ سن کر بھی شرم آتی ہے۔اسی حوالے سے سماجی رابطوں کی سائٹ ٹوئٹرپر اظہارخیال کرتے ہوئے عائشہ نے لکھا عزیز طلبا، تنقید یا اختلاف رائے کا مطلب یہ نہیں کہ آپ کسی کی تضحیک کریں۔ ہم اپنا نقطہ نظرتمیز کے ساتھ بھی بیان کرسکتے ہیں ۔عائشہ عمر نے مزید لکھا کہ پریشان کن حالات میں جذبات پر قابو پانے کی کوشش کریں، یہ ہمارے اور دوسروں کے لیے بہترہے۔

ٹویٹ کے علاوہ عائشہ نے انسٹا اسٹوریزمیں بھی اسکرین شاٹ شیئرکرتے ہوئے لکھا کہ یہ شرمناک ہے، کیا ہم ایسی قوم پروان چڑھارہے ہیں، جوبڑوں کا بالکل احترام نہیں کرتے۔کسی سے اتفاق نہ کرنے کامطلب یہ نہیں کہ آپ تذلیل یا تضحیک کریں، ہمیں بہت سی چیزوں پردوبارہ سوچنے کی ضرورت ہے۔

اداکارہ نے والدین کو بھی تجویز دی کہ ان کے بچے آن لائن کیا کررہے ہیں، اس حوالے سے نگرانی کیے جانے کا وقت آ گیا ہے۔وزارت تعلیم کی جانب سے کرونا کیسزمیں اضافے کے باوجود کیمرج امتحانات کاآغازکیا گیا تاہم بعد ازاں گزشتہ منگل کو انہیں ملتوی کرنے کا اعلان کردیا گیا۔ اس دوران وفاقی وزیرتعلیم کو سوشل میڈیا پر خاصی تنقید کا سامنا بھی کرنا پڑا اوران کا نام ٹاپ ٹرینڈز میں شامل رہا۔