Buy website traffic cheap


ڈبلیو ایچ او نے کورونا کے خلاف جڑی بیوٹیوں سے علاج کی آزمائش منظور کر لی

کانگو(مانیٹرنگ ڈیسک)ڈبلیو ایچ او ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے عالمی ادارہ صحت نے کورونا وائرس کے علاج کیلئے جڑی بوٹیو سے تیار کردہ روایتی افریقی دواﺅں یک آزمائش کی منظوری دے دی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق عالمی ادارہ صحت میں روایتی طب (ٹریڈیشنل میڈیسن) کی علاقائی کمیٹی نے یہ منظوری دی ہے جس کے تحت ان روایتی نباتاتی ادویہ (ہربل میڈیسنز) کے ”فیز تھری کلینیکل ٹرائلز“ یعنی تیسرے مرحلے کی طبی آزمائشوں کا طریقہ کار (پروٹوکول) بھی طے کرلیا گیا ہے۔ امید ہے کہ ان آزمائشوں کا سلسلہ بھی جلد ہی شروع ہوجائے گا۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس کی عالمی وبا کے آغاز میں مڈغاسکر کے صدر آندرے ریجوئلینا نے ملیریا کی ایک روایتی نباتی دوا پی کر دعوی کیا تھا کہ یہی دوا کورونا وائرس سے بھی بچاتی ہے۔ بعد ازاں یہ بات غلط ثابت ہوئی۔

اس کے باوجود، نہ صرف افریقہ بلکہ ایشیا میں بھی ایسی درجنوں روایتی ادویہ ہیں جنہیں کووِڈ 19 کے علاوہ دوسری کئی بیماریوں کا مو¿ثر توڑ سمجھا جارہا ہے۔ تاہم جب تک ان دواو¿ں کی افادیت باقاعدہ سائنسی آزمائشوں (فیز تھری کلینیکل ٹرائلز) سے ثابت نہ ہوجائے، تب تک انہیں کووِڈ 19 کے علاج کےلیے تجویز نہیں کیا جاسکتا۔

یاد دلاتے چلیں کہ خود عالمی ادارہ صحت نے یہ تسلیم کیا ہے کہ میڈیکل سائنس میں حالیہ انقلابی ترقی کے باوجود آج بھی دنیا میں 60 فیصد افراد علاج معالجے کےلیے قدیم و روایتی طریقوں پر ہی انحصار کرتے ہیں