Buy website traffic cheap


کنوارے مردے کے کریا کرم کی رقم لینے پڑوسی لاش سمیت بینک پہنچ گئے

پٹنہ: بھارت میں 60 سالہ کنوارے شخص کے پڑوسی اس کے کریا کرم کی رقم لینے کے لیے لاش لے کر بینک پہنچ گئے۔بھارتی ریاست بہار کے شہر پٹنہ کے ایک کنوارے دیہاتی کی موت سے اس وقت عجیب صورتحال پیدا ہوگئی جب اس کی لاش کو ٹھکانے کے لیے کوئی قریبی رشتہ دار موجود نہیں تھا، یہاں تک کہ 60 سالہ مہیش یادوو کا کوئی دوست بھی نہیں تھا جو اس کی لاش کا کریا کرم کرسکتا۔

رپورٹس کے مطابق پڑوسیوں نے یہ ذمہ دارنہ نبھانے کا فیصلہ کیا لیکن اس کے لیے رقم کا مسئلہ پیدا ہوگیا کہ کریا کرم کے لیے خرچہ کون کرے گا جس پر مہیش کے گھر کی تلاشی لی گئی لیکن گھر سے کچھ نہیں ملا البتہ ایک چیک بک ملی جس سے اس بات کی تصدیق ہوئی کہ مہیش کا بینک میں اکاونٹ بھی تھا۔

بعد ازاں مہیش کے پڑوسی اس کی لاش کو ساتھ لے کر بینک پہنچ گئے اور بینک مینیجر سے رقم کا مطالبہ کرنے لگے کہ ہمیں مہیش کے کریا کرم کے لیے کم از کم 20 ہزار روپے دیے جائیں تاہم بینک مینجر نے صاف انکار کرتے ہوئے کہا کہ وہ بینک قوانین کی خلاف ورزی نہیں کرسکتا جب کہ ہم گزشتہ 2 سال سے مہیش کو یاددہانی کروارہے تھے کہ وہ ایک فارم بھرکر اپنی غیر موجودگی میں رقم حاصل کرنے والے امیدوار کا نام بتادیں لیکن انہوں نے ایسا نہیں کیا۔

پولیس کے مطابق بینک اسٹاف اور مہیش کے پڑوسیوں کے درمیان 3 گھنٹوں سے زائد بحث چلتی رہی آخر میں بینک مینجر نے مخصوص فنڈ سے 15 ہزار روپے کی رقم ادا کی جس پر معاملہ ختم ہوا۔ پولیس نے مزید کہا کہ مہیش ایک دیہاڑی دار تھا اور اس کا ایک ہی بھائی تھا جو کئی سال پہلے گزرچکا تھا اور اس کے علاوہ ان کے خاندان کا کوئی فرد حیات نہیں ہے۔