Buy website traffic cheap


کراچی میں پاکستان تحریک انصاف کا احتجاجی دھرنا ختم

کراچی میں نمائش چورنگی پر بدھ کو شروع ہونے والا پاکستان تحریک انصاف کا احتجاجی دھرنا رات بھر جاری رہنے کے بعد جمعرات کی صبح 8 بجے ختم کر دیا گیا۔احتجاجی دھرنے میں سابق وفاقی وزیر علی حیدر زیدی، فردوس شمیم نقوی، خرم شیر زمان، شہزاد قریشی، بلال غفار اور عباس جعفری موجود رہے، مظاہرے میں میوزیکل نائٹ کا انتظام کیا گیا جس میں کارکنان نے انتہائی جوش خروش کا مظاہرہ کیا۔ پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے دیے گئے دھرنے میں خواتین سمیت کارکنان کی بڑی تعداد موجود رہی۔

سابق وفاقی وزیر علی حیدر زیدی کا دھرنے کے شرکاء سے خطاب میں کہنا تھا کہ پولیس اہلکاروں کو بھی کہتا ہوں کہ یہ دھرنا آپ کے بچوں کے مستقبل کی بھی جنگ ہے کون کب بدل جائے مگر موقع سب کو دینا چاہیے۔علی حیدر زیدی نے شرکاء سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ بہنوں اور نوجوانوں یہاں سے ہلنا نہیں ہے خان صاحب کی تقریر لائیو دکھائی جائے گی، خان صاحب نے بولا گھر جاو¿ گے تو ہی گھر جائیں گے۔

رکن صوبائی اسمبلی و سابقہ اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی نے دھرنے کے شرکا سے خطاب کے دوران پوچھا کہ کیا تم لوگ دھرنے میں خان صاحب کے ساتھ مستقل بیٹھو گے اور جب تک خان صاحب دھرنا ختم نہیں کرینگے اپنے گھروں کو تو نہیں جاﺅ گے جس پر تمام شرکا نے ہاتھ اٹھا کر خان صاحب کے فون آنے تک بیٹھنے کی یقین دہانی کرائی جس پر انہوں نے شرکا سے کہا کہ اگر تم بیٹھو گے تو تمھارے لیے شامیانے لگانے کا بول دوں گھر تو نہیں جاﺅ گے تاہم شرکا نے دوبارہ یک زباں ہو کر دھرنے کے خاتمے کے اعلان تک بیٹھنے کی یقین دہانی کرائی۔

شرکا نے تو اپنے طرف سے بیٹھے رہنے کی یقین دہانی کرا دی تھی تاہم فردوس شمیم نقوی کا شامیانے لگانے کا وعدہ وفا نہ ہوا اور جمعرات کی صبح 8 بجے دھرنا اختتام پذیر ہوگیا۔دوسری جانب رات گئے دھرنے کے شرکاء کو بریانی، پلاو ، رول پراٹھا اور پانی بھی فراہم کیا گیا، دھرنے کے شرکا پوری رات عمران خان سے یکجہتی کے نعرے لگاتے رہے جبکہ پی ٹی ا?ئی کے مخصوص ترانے پر رقص اور عمران خان کے حق میں نعرے لگاتے رہے جبکہ نواز شریف، شہباز شریف، مریم نواز، آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری کے خلاف انتہائی سخت زبان استعمال کرتے رہے۔

عمران خان کی جانب سے اسلام آباد میں دھرنا ختم کرنے کے اعلان کے بعد پی ٹی آئی کراچی کے صدر بلال غفار نے نمائش چورنگی پر شرکا کا شکریہ ادا کرتے ہوئے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کر دیا جس کے بعد کارکنان منتشر ہوگئے جس کے فوری بعد کے ایم سی کے عملے نے موقع پر پہنچ کر صفائی ستہرائی کا کام مکمل کیا بعدازاں ٹریفک پولیس نے دونوں سڑکوں پر ٹریفک کی روانی بحال کروا دی۔