Buy website traffic cheap


مودی نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بہت بڑی غلطی کی، وزیراعظم

اسلام آباد(ماینٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ مودی نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بہت بڑی اسٹریٹیجک غلطی کی ہے۔یوم استحصال کشمیر کے موقع پر مظفرآباد میں آزاد جموں و کشمیر قانون ساز اسمبلی کا خصوصی اجلاس جاری ہے جس میں وزیراعظم عمران خان سمیت صدر اور وزیراعظم آزاد کشمیر شریک ہیں۔ اجلاس کے دوران آزاد کشمیر قانون سازی اسمبلی میں بھارتی اقدام کے خلاف مذمتی قرارداد بھی پیش کی گئی جس کو متفقہ طور پر منظور کرلیا گیا۔

آزاد کشمیر اسمبلی سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ جو صلاحیت پاکستان میں ہے کسی ملک میں نہیں اور پاکستانیوں کو اپنی صلاحیت کا خود بھی اندازہ نہیں، ملک کو تیزی سے اوپر جاتے دیکھا او پھر نیچے کی جانب آتے دیکھا، 60 کی دہائی میں پاکستان کو دنیا میں مانا جاتا تھا، دنیا کی تاریخ دیکھیں تو قوم اصولوں پر چلتی ہے تو اوپر جاتی ہے اور اصولوں سے ہٹ جاتی ہے تو نیچے آجاتی ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ اللہ تعالیٰ کشمیریوں کو ایسی صورتحال سے گزار رہاہے جس کا اختتام آزادی ہے، مودی گزشتہ سال 5 اگست کو بہت بڑی غلطی کر بیٹھا ہے، مودی نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بہت بڑی اسٹریٹیجک غلطی کی۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ مودی نے ہندو کارڈ کھیل کر الیکشن جیتا، پاکستان کے خلاف نفرت کی مہم چلائی، مودی نے پلوامہ واقعے کو پاکستان کے خلاف نفرت کیلئے استعمال کیا، بھارت کو بار بار کہا آپ ایک قدم بڑھاو ہم دو بڑھائیں گے، ہم نے بات چیت کے زریعے مسئلہ کشمیر کے حل کی پیشکش کی۔

وزیراعظم نے کہا کہ مودی سمجھتا تھا غیرقانونی اقدام پر دنیا خاموش رہے گی تاہم گزشتہ ایک سال میں دنیا میں مسئلہ کشمیر بھرپور طریقے سے اٹھایا گیا، بھارت سوچے سمجھے منصوبے کے تحت کشمیرکی آبادی کا تناسب بدلنا چاہتا تھا جب کہ چین سے خوفزدہ مغربی ممالک بھارت کو استعمال کرنا چاہتے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ بھارتی حکومت کی تمام سرگرمیوں کے پیچھے تکبر ہے، مودی کی متکبرانہ سوچ اس کی تباہی ثابت ہوگی، روس نے تکبر کی وجہ سے اپنی فوج تباہ کرلی۔وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر نے خطاب میں کہا کہ نریندر مودی کی سوچ فاشسٹ ہے، بھارت کے مقبوضہ کشمیر میں مظالم کی بھرپور مذمت کرتے ہیں، مقبوضہ کشمیر میں طویل محاصرہ ختم کر کے تمام سیاسی قیادت کو رہا کیا جائے۔