Buy website traffic cheap


سراج الحق نے امدادی رقم کی تقسیم پر اعتراض اٹھادیا

وہاڑی(مانیٹرنگ ڈیسک)امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ امدادی رقم کی تقسیم کا جو طریقہ حکومت کی طرف سے اپنایاگیاہے وہ بالکل غلط ہے۔

مرکزی امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے وہاڑی کا دورہ کیا۔ اس موقع پر سنٹرل جیل میں الخدمت فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام کورونا وائرس سے بچاؤ کے لئے حفاظتی سامان تقسیم کیا گیا جس میں سینی ٹائزر ،صابن ، حفاظتی کٹس سمیت دیگر حفاظتی سامان شامل تھا۔

سراج الحق نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ الخدمت فاؤنڈیشن کے رضاکار جیلوں اور پولیس سٹیشنز میں جاکر حفاظتی سپرے کررہے ہیں، جماعت اسلامی 63کروڑ روپے سے زائد مالیت کا راشن 33لاکھ مستحق افراد میں تقسیم کرچکی ہے، الخدمت خواتین رضاکار بھی بیوہ خواتین اور یتیم بچوں میں ایک ارب روپے کی امداد پہنچاچکی ہیں۔سراج الحق نے کہا کہ حکومت کورونا وائرس سے بچاؤ کےلئے تمام اپوزیشن جماعتوں سے ملکر نیشنل ایکشن پلان بنائے، وزیراعظم عمران خان بڑےدل کا مظاہرہ کرتے ہوئے خود تمام سیاسی رہنماؤں سے رابطہ کریں، اتنے مشکل وقت میں بھی حکومت سنجیدہ دکھائی نہیں دیتی ہے اور اپنی انا سے باہر نہیں نکل رہی ہے۔

امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ ہماری حکومت عاجزی اور خاکساری کی بجائے تکبر کا مظاہرہ کررہی ہے جسکا نقصان عوام کو بھگتنا پڑرہاہے، امدادی رقم کی تقسیم کا جو طریقہ حکومت کی طرف سے اپنایاگیاہے وہ بالکل غلط ہے، اس میں کورونا سے بچاؤ کی حفاظتی تدابیر کو نظر انداز کیاجارہاہے۔

سراج الحق نے مزید کہا کہ حکومت نے ایک دن ڈاکٹر کو سلام پیش کیا تو اگلے دن انہی ڈاکٹرز پر ڈنڈے بھی برسائے جو قابل افسوس ہے، ملک میں کورونا وائرس پھیلنے کی شرح بہت زیادہ اور خطرناک ہے حکومت فوری طور پر صحت ایمرجنسی نافذ کرے۔