Buy website traffic cheap


وزیراعظم کی جاسوسی پر اسپین کی خفیہ ایجنسی کی سربراہ برطرف

وزیراعظم کی جاسوسی پر اسپین کی خفیہ ایجنسی کی سربراہ کو برطرف کردیا گیا۔رپورٹ کے مطابق ہسپانوی حکومت نے وزیراعظم، وزرا اور دیگرسیاسی رہنماوں کے فون ٹیپ کرنے پرخفیہ ایجنسی کی پہلی خاتون سربراہ —پازایسٹین— کو برطرف کردیا ہے۔

اسپین کی خفیہ ایجنسی پر اسرائیلی کمپنی کے جاسوسی سافٹ وئیر پیگاسس کے ذریعے وزیراعظم، وزیردفاع اور دیگر سیاستدانوں کے فون کی جاسوسی کا الزام ہے۔ وزیرِاعظم کا فون مئی 2021 میں دو مرتبہ ہیک کیا گیا اور ایک مرتبہ ڈیٹا لیک ہوا۔

اے ایف پی کے رابطہ کرنے پر وزیراعظم آفس نے ان خبروں پر تبصرے سے انکار کر دیا ہے۔پازایسٹین اسپین کی خفیہ ایجنسی کی سربراہی کرنے والی پہلی خاتون ہیں، وہ گزشتہ ہفتے فون ہیکنگ سکینڈل کے حوالے سے پارلیمانی کمیٹی کے سامنے پیش ہوئی تھیں۔

جہاں انہوں نے تصدیق کی کہ سی این آئی نے کیٹیلان کے علیحدگی پسندوں کی جاسوسی کی تاہم ان کا کہنا تھا کہ ایسا عدالت کی اجازت سے کیا گیا۔مذکورہ سکینڈل اپریل میں سامنے آیا تھا جب کینیڈا کی سائبر سکیورٹی کی نگرانی کے ادارے سیٹیزن لیب نے کہا تھا کہ 2017 کی آزادی کی ناکام کوشش کے بعد کیٹیلان کی علیحدگی پسندی کی تحریک سے وابستہ 60 افراد کے فونز اسرائیلی جاسوسی سافٹ ویئر پیگاسس کی ذریعے ٹیپ کیے گئے۔