Buy website traffic cheap


اسٹیٹ بینک بل کی منظوری میں یوسف رضا گیلانی اور پیپلز پارٹی کے شکر گزار ہیں، فواد چوہدری

اسلام آباد: وزیر اطلاعات فواد حسین چوہدری کا کہنا ہے کہ اسٹیٹ بینک ترمیمی بل کی منظوری میں ساتھ دینے پر یوسف رضا گیلانی اور پیپلز پارٹی کے شکر گزار ہیں، امید ہے اس بڑی شکست کے بعد اپوزیشن کے کچھ دن آرام سے گزریں گے۔

سینیٹ میں اسٹیٹ بینک ترمیمی بل منظور ہونے کے بعد اپنے ٹویٹ میں وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ حکومت نے ثابت کیا ہے کہ تمام جماعتیں مل کر بھی ایک عمران خان کے آگے ڈھیر ہیں، اللہ کی مدد شامل حال رہی تو انشاللہ کامیابیوں کا سفر رکنے والا نہیں۔

فواد چوہدری کا مزید کہنا تھا کہ عدم اعتماد کا خواب دیکھنے والے اس ایوان میں بھی ناکام ہوئے جہاں ان کی نام نہاد اکثریت ہے، الحمدللّٰہ ایک اور دن میں ایک اور کامیابی ملی۔

دریں اثنا لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ سیاسی طور پر آج اپوزیشن کو شکست ہوئی جس میں ہماری بہتری ہے، آج اپوزیشن کی شکستوں میں مزید اضافہ ہوگیا،

وہ جو خواب دیکھ رہے تھے کہ ہم قومی اسمبلی میں عدم اعتماد کی تحریک لائیں گے وہ خواب ان کا اس ایوان میں بھی پورا نہیں ہوا جہاں ان کی نام نہاد اکثریت تھی

 سینیٹ میں اپوزیشن کی اکثریت ہونے کے باوجود وہ اسٹیٹ بینک ترمیمی بل نہیں روک سکے تو قومی اسمبلی میں کیا کریں گے۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ اس بری شکست کے بعد امید ہے کہ اپوزیشن سکون سے ہوگی، ان کے کچھ دن آرام سے گزریں گے،

آج کی شکست نے اپوزیشن کے سیاسی طور پر ناکارہ ہونے پر ایک اور مہر لگادی، یہ چوں چوں کا مربہ ہے، کہاں کی اینٹ کہاں کا روڑہ، بھان متی نے کنبہ جوڑا، کیوں کہ ن لیگ میں جو لڑائی ہے وہ سب کے سامنے ہے، پیپلز پارٹی میں کسی کو پتا ہی نہیں کہ کیا کرنا ہے، یہ ناکارہ اپوزیشن ہے جو کچھ نہیں کرسکتی۔

راوی ریور پروجیکٹ کے معاملے پر انہوں نے کہا کہ جب بھی عدالت نے اپنے اختیار سے تجاوز کیا اس کا ملک کو نقصان پہنچا، کچھ اختیارات پارلیمنٹ کے ہوتے ہیں کچھ عدلیہ کے، جس کے جو اختیارات ہیں وہ اسی کے پاس ہونے چاہئیں، یہ نیا شہر ایک لاکھ ایکڑ پر لاہور کے قریب بن رہا ہے،

 

اس سے سینٹرل پنجاب کو بہت فائدہ ہوگا اور بیرونی سرمایہ کاری آئے گی، یہ عوامی دلچسپی کے معاملات ہیں جنہیں ملک کا چیف ایگزیکٹو بہتر طور پر دیکھ سکتا ہے۔

فواد چوہدری نے طنز کرتے ہوئے کہا کہ اس بل کی منظوری میں بالخصوص یوسف رضا گیلانی اور پیپلز پارٹی کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے اسے منظور کرانے اور ملک کی بہتری میں ساتھ دیا۔

 

انہوں نے مسلم لیگ ن کے ارکان کا بھی شکریہ ادا کیا اور کہا کہ میں ان کا شکر گزار ہوں کہ وہ نواز شریف کو پارٹی سے ہٹانے میں کامیاب ہوگئے۔